امریکی وزیرِ دفاع کے لیے جنرل ماٹس کی نامزدگی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption نامزد وزیرِ دفاع ایران کو مشرق وسطیٰ میں امن و استحکام کی راہ میں بڑا خطرہ سمجھتے ہیں

امریکہ کے نومنتخب صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے جنرل جیمز ماٹس کو وزیرِ دفاع نامزد کیا ہے۔

امریکی ریاست اوہائیو میں اپنے حامیوں سے خطاب کے دوران مسٹر ڈونلڈ ٹرمپ نے جنرل ماٹس کی نامزدگی کا اعلان کیا۔

انھوں نے کہا کہ 'وہ ہمارا بہترین ہے۔'

٭ ’ٹرمپ کی وجہ سے نفرت میں اضافہ‘

جنرل ماٹس 'میڈ ڈاگ' کے نام سے معروف ہیں اور مشرقِ وسطیٰ خاص طور پر ایران میں صد اوباما کی پالیسیوں کے ناقدین میں شامل ہیں۔

وہ ایران کو مشرقِ وسطیٰ کے امن و استحکام کے لیے بڑا خطرہ قرار دیتے ہیں۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے خطاب میں کہا کہ مسٹر میٹس جنگِ عظم دوم کے کمانڈر جنرل جارج پیٹن کی طرح ہیں۔

نامزد وزیرِ دفاع جنرل ماٹس کی عمر 66 برس ہے اور وہ ریٹائرڈ میرین کمانڈر ہیں۔ انھوں نے نہ 1991 میں خلیج کی جنگ اور سنہ 2001 میں جنوبی افغانستان میں ٹاسک فورس کی کمانڈ کی۔

انھوں نے سنہ 2003 میں عراق میں ہونے والے حملے میں بھی حصہ لیا اور خصوصاً اسی سال کے آخر میں ہونے والی جنگِ فلوجہ میں بھی حصہ لیا۔

سنہ 2013 میں وہ اپنے عہدے سے ریٹائرڈ ہوئے۔

خیال رہے کہ امریکی قانون کے مطابق وزیرِ دفاع کا عہدہ سھنبالنے کے لیے کسی بھی ریٹائرڈ فوجی افسر کے لیے یہ لازم ہوتا ہے کہ اس نے کم ازکم سات سال ریٹائرمنٹ میں گزارے ہوں۔

اسی بارے میں