فلوریڈا فائرنگ کا مشتبہ حملہ آور گرفتار

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں
فلوریڈا ایئرپورٹ پرفائرنگ کا مشتبہ حملہ آور گرفتار

امریکی حکام کے مطابق ریاست فلوریڈا کے فورٹ لاڈرڈیل ایئرپورٹ پر حملہ کرنے کے شبہے میں ایک شخص کو حراست میں لے لیا گیا ہے اس واقعے میں کم از کم پانچ ہلاکتوں کی تصدیق ہوئی ہے۔

مقامی حکام اور پولیس کا کہنا ہے کہ فائرنگ کے نتیجے میں آٹھ افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔ ایک امریکی شہری ایستیبان سینتیاگو جن کی شناخت عراق جنگ میں حصہ لینے والے 26 سالہ سپاہی کی حیثیت سے ہوئی ہے کو حملے کے شہبے میں حراست میں لیا گیا ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ اس واقعے میں دہشت گردی کے امکان کو رد نہیں کیا جا سکتا۔

امریکی میڈیا کا کہنا ہے کہ زیرِ حراست شخص ذہنی طور پر پریشان تھا اور اس کے بارے میں یہ رپورٹ کیا گیا ہے کہ وہ کہتا تھا کہ حکومت اس کے ذہن کو کنٹرول کرتی ہے اور اسے جہادی ویڈیوز کو دیکھنے کو کہا جاتا ہے۔

حملہ آور نے لوگوں کو اس وقت نشانہ بنایا جب وہ ٹرمینل ٹو پر اپنا سامان لے رہے تھے۔

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ جب حملہ آور کے پاس گولیاں ختم ہو گئیں تو اس نے پولیس کے سامنے ہتھیار ڈال دیے۔

پینٹاگون کا کہنا ہے کہ مشتبہ حملہ آور سنہ 2010 سے سنہ 2011 تک عراق میں تعینات رہا جب کہ گذشتہ برس ان کی ملازمت ختم ہوئی۔

امریکی میڈیا کا کہنا ہے کہ عیر تسلی بخش کارکردگی کی بنا پر ایستیبان سینتیاگو کو ان کی نوکری سے نکالا گیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ CBS
Image caption سینکڑوں افراد باہر سڑک پر کھڑے ہیں جبکہ درجنوں پولیس کی گاڑیاں اور ایمولینسیں جائے وقوع پر پہنچ گئیں

اس سے قبل وائٹ ہاؤس کے سابق پریس سیکریٹری ایری فلیچر نے ایک ٹویٹ میں کہا تھا کہ ’میں فورٹ لاڈرڈیل ایئرپورٹ پر موجود ہوں، یہاں فائرنگ ہوئی ہے، ہر کوئی بھاگ رہا ہے۔‘

عینی شاہدین کا کہنا ہے ’مسلح شخص دبلا پتلا سا تھا اور اس نے سٹار وارز کی ٹی شرٹ پہن رکھی تھی۔‘

پولیس کو مقامی وقت کے مطابق دوپہر ایک بجے اطلاع ملی کہ ٹرمینل پر گولیاں چل رہی ہیں۔

شیرف سکاٹ اسرائیل نے کہا کہ بندوق بردار کو بغیر گولی چلائے گرفتار کر لیا گيا ہے۔

انھوں نے کہا: 'ابھی صرف یہ کہا جا سکتا ہے کہ اس نے تنہا یہ کام کیا ہے۔'

حکام کا کہنا ہے کہ وہ ایک مسافر تھا جس نے اپنے سامان میں گن اور گولیوں کے ساتھ چیک ان کیا تھا لیکن اس نے لینڈ کرنے پر اپنا سامان حاصل کیا اور پھر بندوق کو باتھ روم میں لوڈ کیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption فورٹ لاڈرڈیل ایئرپورٹ کے سامان لے جانے کی جگہ پر فائرنگ ہوئی

خیال رہے کہ امریکہ میں اسلحے کے ساتھ سفر کرنا قانونی ہے البتہ اسے چیکڈ ان سامان کے ساتھ ٹھوس بکسے میں رکھا جاتا ہے اور گولیوں کو بھی سامان کے ساتھ علیحدہ رکھا جا سکتا ہے۔

حملے کی ابتدائی اطلاعات کے دو گھنٹے بعد ایک شخص کو ہتھکریاں پہنائے ایئرپورٹ سے لے جاتے ہوئے دیکھا گیا ہے۔

ایئر پورٹ حکام کا کہنا ہے کہ ٹرمینل 2 پر سامان کے لیے مخصوص علاقے میں یہ واقعہ پیش آیا ہے۔

میامی کے ایک ٹی وی سٹیشن میں ایک فوٹیج بھی چلائی گئی ہے جس کے متعلق دعویٰ کیا گیا ہے کہ وہ ایئرپورٹ کے بیگج ٹرمینل سے بھیجی گئی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption اس حملے میں آٹھ افراد زخمی بھی ہوئے ہیں

اس ویڈیو میں کئی لوگوں کو فرش پر گرے ہوئے دکھایا گیا ہے اور وہاں موجود دوسرے لوگ مدد کے لیے پکار رہے ہیں۔

وائٹ ہاؤس کے ترجمان کا کہنا ہے کہ امریکی صدر باراک اومابا نے اس واقعہ میں ہلاک ہونے والے افراد کے لواحقین کے ساتھ تعزیت کی ہے۔

امریکی نو منتخب صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ وہ ’فلوریڈا کی دردناک صورتحال کا جائزہ لے رہے ہیں‘ اور انھوں نے اس حوالے سے فلوریڈا کے گورنر سے بات بھی کی ہے۔

ڈونلڈ ٹرمپ کا مزید کہنا تھا کہ ’سب کے لیے دعائیں اور نیک تمنائیں ہیں۔ آپ سب محفوظ رہیں۔‘

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں