ٹیکس عائد کرنے سے امریکی ہی دیوار کے اخراجات دیں گے: میکسیکو

دیوار تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

میکسیکو نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی میکسیکو سے درآمدات پر 20 فیصد ٹیکس عائد کر کے سرحد پر دیوار کی تعمیر کے اخراجات پورے کرنے کی تجویز کی مذمت کی ہے۔

میکسیکو کے وزیرِ خارجہ لوئیس ودیگرائے کا کہنا ہے کہ درآمدات پر 20 فیصد ٹیکس عائد کرنے سے امریکی صارفین کے لیے میکسیکو کی درآمدات مزید مہنگی ہو جائیں گی اور آخر میں امریکی صارفین ہی دیوار کی تعمیر کی رقم دیں گے۔

’میکسیکو سے درآمدات پر ٹیکس عائد کر کے دیوار کے اخراجات پورے کریں گے‘

دیوار کے لیے رقم نہیں دینی تو میکسیکن صدر دورۂ امریکہ منسوخ کر دیں: ٹرمپ

امریکی صدر ٹرمپ کا میکسیکو کی سرحد پر دیوار تعمیر کرنے کا حکم

امریکہ اور میکسیکو کے درمیان دیوار کی تعمیر پر پیدا ہونے والے تنازع کے بعد میکسیکو کے صدر انریق پینا نیٹو نے اپنا طے شدہ دورۂ امریکہ منسوخ کر دیا ہے۔

ڈونلڈ ٹرمپ کی صدارتی مہم میں ان کا ایک اہم انتخابی نعرہ میکسیکو کی سرحد پر 2000 میل طویل دیوار تعمیر کرنا تھا۔

اس سے پہلے ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک حکم نامے میں امریکہ اور میکسیکو کی سرحد پر دیوار کی تعمیر کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا تھا کہ اس منصوبے کے سو فیصد اخراجات بھی میکسیکو سے لیے جائیں گے۔

میکسیکو کے وزیرِ خارجہ لوئیس ودیگرائے کا جمعرات کو کہنا تھا 'میکسیکو سے درآمدات پر 20 فیصد ٹیکس عائد کر کے دیوار کی تعمیر پر آنے والے اخراجات وصول کرنا کوئی طریقہ نہیں ہے۔ لیکن شمالی امریکی کے صارفین سے پھل، واشنگ مشینز اور ٹیلیویژن وغیرہ جیسی اشیا کو مہنگے داموں میں فروخت کر کے یہ رقم جمع کی جا سکتی ہے۔'

انھوں نے زور دے کر کہا 'ڈونلڈ ٹرمپ کی دیوار کے لیے ادائیگی کے معاملے پر میکسیکو بات نہیں کرے گا۔'

اس سے پہلے جمعرات کو وائٹ ہاؤس کے ترجمان شون سپائسر کا کہنا تھا کہ میکسیکو سے درآمدات پر 20 فیصد ٹیکس سے اندازہ سالانہ دس ارب ڈالر حاصل ہوں گے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں