بیوی کے فون سے ’اُوبر‘ بلانا مہنگا پڑا

اوبر ایپ تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption شوہر کے سفر کی تفصیلات ان کی اہلیہ کے فون پر مسلسل آتی رہیں

جنوبی فرانس میں ایک بڑی کاروباری شخصیت نے اپنا معاشقہ اہلیہ پر افشا ہونے کے بعد مشہور ٹیکسی سروس ’اُوبر‘ کے خلاف قانونی کارروائی کا آغاز کر دیا ہے۔

مذکورہ شخص کا الزام ہے کہ اُنھوں نے صرف ایک مرتبہ اپنی محبوبہ سے ملنے کے لیے اپنی اہلیہ کے فون سے اُوبر کار کا آرڈر دیا تھا اور اس کے بعد اہلیہ کے فون سے اُوبر کی ایپ سے سائن آف کر دیا تھا، لیکن اس کے باوجود کپمنی ان کے ہر سفر کی تفصیل ان کے اہلیہ کو بھجواتی رہی۔ اس کا نتیجہ یہ نکلا کہ انھوں نے جو بھی سفر کیے ان کی تفصیلات ان کی اہلیہ کے پاس آتی رہیں جس نے ان کی اہلیہ کے شک کو تقویت دی کہ ان کے شوہر کا کسی سے معاشقہ چل رہا ہے۔

اس واقعے کے بعد دونوں میں طلاق ہو گئی تھی اور کہا جا رہا ہے کہ مذکورہ کاروباری شخصیت نے اُوبر کے خلاف چار کروڑ 80 لاکھ ڈالر کا دعویٰ کیا ہوا ہے۔

شوہر کے وکیل نے فرانسیسی خبر رساں ادارے سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کے مؤکل اصل میں اُوبر کی ایپ کے ایک اندر ایک ’بگ‘ کی وجہ سے متاثر ہوئے ہیں ۔ ’میرے مؤکل کی ذاتی زندگی میں جو مسائل پیدا ہوئے ہیں اس کی وجہ یہ بگ ہے۔‘

تاہم وکیل نے ایک معروف فرانسیسی روزنامے میں شائع ہونے والی اس خبر پر کوئی تبصرہ نہیں کیا جس میں کہا گیا ہے کہ ان کے موکل نے چار کروڑ 80 لاکھ ڈالر کی خطیر رقم کا دعویٰ کیا ہوا ہے۔ وکیل کا کہنا تھا کہ ان کے موکل کی خواہش ہے کہ ان کا نام سامنے نہ آئے اور وہ اس سارے معاملے میں پردہ داری رکھنا رکھنا چاہتے ہیں۔‘

روزنامہ لی فیگارو کا مزید کہنا تھا کہ مذکورہ شخصیت کے علاہ کئی دیگر لوگوں کو بھی اُوبر کی ایپ میں بگ کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

اخبار کے مطابق انھوں نے خود ایک تجربہ کر کے دیکھا کہ جب انھوں نے ایک آئی فون سے اُوبر کے ڈرائیور کو بلوایا اور پھر ایک دوسرے آئی فون پر ’لاگ اِن‘ کر لیا، لیکن اُوبر نے اس آرڈر کی اطلاع دونوں فونز پر بھجوا دی۔

اُوبر کا کہنا تھا کہ وہ اس خاص معاملے پر تبصرہ کرنے سے گریز کریں گے، تاہم کمپنی کا کہنا تھا کہ اپنے صارفین کے ذاتی کوائف کو محفوظ رکھنا ان کی ترجیحات میں سے ایک ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں