شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ ان کے سوتیلے بھائی کوالالمپور میں ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption جنوبی کوریا کے ذرائع ابلاغ کے مطابق کم جونگ نام کو دو خواتین نے ہوائی اڈے پر زہر دیا

جنوبی کوریا اور ملائیشیا کے ذرائع کے مطابق شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ ان کے سوتیلے بھائی ملائیشیا کے شہر کوالالمپور میں ہلاک ہوگئے ہیں۔

کم جونگ نام کی عمر 45 برس تھی اور انھیں ملائیشیائی دارالحکومت کے ہوائی اڈے پر نشانہ بنایا گیا۔

وہ شمالی کوریا کے سابق سربراہ کم جونگ ال کے سب سے بڑے صاحبزادے تھے۔

ملائیشیا کی پولیس نے خبر رساں ادارے روئٹرز سے بات کرتے ہوئے تصدیق کی ہے کہ وہ شمالی کوریائی شہری جو ہوائی اڈے سے ہسپتال کے سفر کے دوران چل بسا وہ کم جونگ نام ہی تھے۔

ملائیشیا کے وزیراعظم ہاؤس کے ذرائع کے مطابق کم جونگ نام کی لاش کا پوسٹ مارٹم کیا جا رہا ہے۔

جنوبی کوریا کے ذرائع ابلاغ کے مطابق کم جونگ نام کو دو خواتین نے ہوائی اڈے پر زہر دیا۔ تاہم یہ واضح نہیں کہ ان خواتین کا تعلق کہاں سے ہے۔

کم خاندان کے ایک قریبی ذریعے نے بھی بی بی سی سے بات کرتے ہوئے تصدیق کی کہ کم نام کی ہلاکت کا تعلق زہرخورانی سے ہے۔

2001 میں کم جونگ نام جعلی پاسپورٹ پر جاپان میں داخل ہونے کی کوشش کے دوران گرفتار کیے گئے تھے۔

انھوں نے جاپانی پولیس کو بتایا تھا کہ وہ ٹوکیو کا ڈزنی لینڈ دیکھنا چاہتے تھے۔ کہا جاتا ہے کہ اس واقعے کے بعد ان کے والد کی نظروں میں ان کی وقعت کم ہوگئی تھی۔

2011 میں والد کی وفات اور اپنے چھوٹے بھائی کے اقتدار سنبھالنے کے بعد کم جونگ نام نے اپنا زیادہ وقت مکاؤ، سنگاپور اور چین میں گزارا۔

2011 میں جاپانی میڈیا میں ان کا ایک بیان بھی سامنے آیا تھا جس میں انھوں نے کہا تھا کہ وہ وراثتی حکمرانی کے حق میں نہیں۔