ہٹلر کا فون دو لاکھ 43 ہزار ڈالر میں فروخت

ٹیلی فون تصویر کے کاپی رائٹ AFP/GETTY IMAGES
Image caption یہ فون دوسری جنگ عظیم کے دوران جرمنی کے رہنما اڈولف ہٹلر کے زیر استعمال تھا اس کے نئے مالک کے نام کو ظاہر نہیں کیا گیا ہے

جرمنی کے سابق رہنما اڈولف ہٹلر نے دوسری جنگ عظیم کے دوران جس ٹیلیفون کا استعمال کیا تھا اسے امریکہ میں دو لاکھ 43 ہزار امریکی ڈالر میں خرید لیا گیا ہے۔

فون خریدنے والے شخص کی شناخت ظاہر نہیں کی کئی ہے۔

اتوار کو امریکی ریاست میری لینڈ میں اس فون کی بولی لگائی گئی۔ منتظمین نے ابتدائی بولی ایک لاکھ امریکی ڈالر رکھی تھی۔

٭ ہٹلر کے گھر کو گرانے کا فیصلہ

٭ ہٹلر کے آبائی گھر کے حصول کے لیے قانون سازی

لال رنگ کے اس فون پر جرمن رہنما ہٹلر کا نام کندہ ہے اور یہ برلن کے ایک بنکر سے سنہ 1945 میں برآمد ہوا تھا۔

سویت فوجیوں نے جرمنی کے ہتھیار ڈالنے کے بعد برطانوی بریگیڈیئر سر راف رینر کو یادگار کے طور پر یہ فون تحفے میں دیا تھا۔

الیگزینڈر ہسٹاریکل آکشنس نامی نیلام گھر نے اس فون کو فروخت کیا۔

اس سے قبل نیلام گھر کے منتظمین نے بتایا تھا کہ سر راف کے بیٹے اس فون کو فروخت کر رہے ہیں اور اس نے امید ظاہر کی تھی کہ اس کی قیمت تین لاکھ ڈالر تک جا سکتی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption چینی مٹی سے تیار کردہ کتے کا مجسمہ بھی ہٹلر کی ملکیت تھا

نیلام گھر کے اہلکار بل پیناگوپلس نے خبر رساں ادارے اے پی کو بتایا تھا کہ یہ فون 'وسیع پیمانے پر تباہی پھیلانے والا ہتھیار' تھا کیونکہ یہ ہٹلر کے استعمال میں تھا جو اس کے ذریعے حکم جاری کیا کرتے تھے، اس فون نے جنگ کے دوران بہت سے افراد کی جانیں لیں۔

اتوار کو ہونے والی نیلامی میں ایک الشیشن کتے کا مجسمہ بھی فروخت ہوا اور یہ بھی ہٹلر کی ملکیت تھا۔

اسے ایک دوسرے شخص نے 24300 امریکی ڈالر میں حاصل کیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP/GETTY IMAGES
Image caption فون کے اس سیٹ پر ہٹلر کا نام کندہ ہے

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں