لندن میں بیساکھی

برطانیہ کے دارالحکومت میں سکھوں کے روایتی تہوار بیساکھی کی تقریبات کا آغاز ہو گیا جو ایک ہفتے جاری رہیں گی۔

بیساکھی
،تصویر کا کیپشن

گذشتہ آخر ہفتہ کو لندن میں سکھوں کے مذہبی اور تاریخی تہوار بیساکھی کی تقریبات کا آغاز ہوا۔ یہ تقریبات تقریباً ایک ہفتہ جاری رہیں گی اور ان کا اختتام جمعہ 14 اپریل کو مقامی گرو دواروں میں دعائیہ محفلوں اور کھانا تقسیم کر کے کیا جائے گا۔

،تصویر کا کیپشن

سکھ بیساکھی کا تہوار ہر سال 13 یا 14 اپریل کو مناتے ہیں اور تہوار نہ صرف سکھ کیلینڈر کے مطابق نئے سال کے آغاز کا اعلان ہوتا ہے بلکہ یہ سکھوں کے مشہور رہنما گرو گوبند سنگھ کے قائم کردہ خالصہ سلسلے کی یاد میں منایا جاتا ہے جس کا آغاز انھوں نے 1699 میں کیا تھا۔

،تصویر کا کیپشن

لندن میں بیساکھی کا آغاز شہر کے مغربی علاقے ساؤتھ ہال کے ایک گرودوارے سے جلوس کی شکل میں ہوا جس میں سینکڑوں افراد شریک تھے۔

،تصویر کا کیپشن

جلوس میں سکھوں کی دیگر تاریخی اور مذہبی علامات کے علاوہ شرکا نے اپنی مقدس کتاب گرنتھ صاحب بھی اٹھا رکھی تھی۔

،تصویر کا کیپشن

مردوں کے علاہ جلوس میں خواتین کی بھی بڑی تعداد شامل تھی۔

،تصویر کا کیپشن

اس موقع پر نہ صرف ساؤتھ ہال کے علاقے میں واقع دو بڑے گرودواروں کو سجایا گیا تھا، بلکہ جلوس کے شرکاء بھی روایتی ملبوسات پہنے ہوئے تھے۔

،تصویر کا کیپشن

شہر کے گرودواروں سے روزانہ مفت کھانا دیا جاتا ہے اور بیساکھی کی مناسبت سے مختلف تنظیموں نے سڑک کے کنارے سٹال لگا رکھ تھے جہاں سے کھانا تقسیم کیا جا رہا تھا۔

،تصویر کا کیپشن

بیساکھی کی رنگارنگ تقریبات میں مختلف رنگ و نسل کے لوگوں نے شرکت کی اور تمام دن سڑک پر میلے کا سماں رہا۔

،تصویر کا کیپشن

منتظمین کا کہنا تھا انھوں نے تقریبات کا آغاز اتوار کو اسی لیے کیا تاکہ زیادہ سے زیادہ لوگ ان میں شرکت کر سکیں اور علاقے میں لوگوں کو ٹریفک وغیرہ کے مسائل کا سامنا بھی نہ کرنا پڑے۔

،تصویر کا کیپشن

کچھ ریٹائرڈ شرکا اپنی سرکاری وردی اور اعزازات کے ساتھ بھی دکھائی دیے۔

،تصویر کا کیپشن

کھانوں کے سٹالوں کے علاوہ ان سٹالوں پر خاصا حجوم دیکنے میں آیا جہاں مخلتف مذہبی شخصیات کی تصاویر اور دیگر اشیاء فروخت کی جا رہی تھیں۔

،تصویر کا کیپشن

جلوس کے آخر میں شرکاء جب دوسرے گرودوارے پہنچے تو وہاں خصوصی دعائیہ تقریب منعقد کی گئی۔

،تصویر کا کیپشن

اس موقعے پر حاضرین کے لیے ایک خصوصی محفل کا اہتمام بھی کیا گیا تھا جس میں فنکاروں نے گرو نانک اور بابا فرید کا صوفیانہ کلام پیش کیا۔

،تصویر کا کیپشن

گرو کے ’پانچ پیاروں‘ کے رنگ میں ملبوس دستہ لوگوں کی توجہ کا خاص مرکز رہا۔