’شمالی کوریا کا میزائل تجربہ ناکام، لانچ کے چند سیکنڈ میں پھٹ گیا‘

کوریا

،تصویر کا ذریعہReuters

جنوبی کوریا اور امریکہ کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا کی جانب سے مشرقی ساحل پر میزائل لانچ کرنے کی کوشش ناکام ہو گئی ہے۔

شمالی کوریا کو ناکامی کا سامنا ایسے وقت میں کرنا پڑا ہے جب ایک روز قبل ہی اس نے امریکہ کو متنبہ کیا تھا کہ 'اگر امریکہ ہمارے خلاف لاپرواہی پر مبنی اشتعال انگیزی کرتا ہے، تو ہماری انقلابی قوت فوری طور پر اس کا سنگین جواب دے گی۔ ہم بھرپور جنگ کا اور جوہری جنگ کا اپنے انداز میں جوہری حملے سے جواب دیں گے'۔

امریکہ اور جنوبی کوریا کا کہنا ہے کہ میزائل لانچ کے چند سیکنڈ بعد ہی پھٹ گیا۔

واضح رہے کہ اس ناکام تجربے سے 24 گھنٹے قبل ہی فوجی پریڈ میں دور مار کرنے والے بیلسٹک میزائل کی نمائش کی گئی تھی۔

شمالی کوریا اقوام متحدہ کی قراردادوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے پانچ ایٹمی تجربے پہلے کر چکا ہے۔

جنوبی کوریا کی وزارت دفاع کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے 'شمالی کوریا نے اپنی مشرقی بندرگاہ سنپو سے نامعلوم قسم کے میزائل کا تجربہ کرنے کی کوشش کی لیکن یہ تجربہ ناکام رہا۔'

امریکی کمانڈ نے بھی ناکام تجربے کی تصدیق کی اور کہا کہ انھوں نے ڈیٹیکٹ کیا اور پیچھا کرنے پر معلوم ہوا کہ وہ بظاہر شمالی کوریا کا بیلسٹک میزائل تھا۔

خبر رساں ادارے روئٹرز نے امریکی بحریہ کے کمانڈر ڈیو بینہم کے حوالے سے کہا ہے کہ ’میزائل تقریباً فوراً ہی پھٹ گیا تھا۔‘

،ویڈیو کیپشن

شمالی کوریا کی فوجی طاقت کا مظاہرہ

اس سے قبل شمالی کوریا کے بانی صدر کم ال سنگ کی 105 ویں یوم پیدائش کی تقریبات کے موقع پر شمالی کوریا نے سنیچر کو بظاہر اپنا ممکنہ جوہری تجربہ کرنے سے گریز کیا لیکن اپنی جدید عسکری قوت کا مظاہرہ کرتے ہوئے ایک بار پھر امریکہ کو متنبہ ضرور کیا تھا۔

پیانگ یانگ میں ہونے والی فوجی پریڈ میں شمالی کوریا نے پہلی بار بیلسٹک میزائل کی نمائش کی جو آبدوز سے لانچ کیے جانے والے میزائل سے مشابہت رکھتا ہے۔ اس میزائل میں ایٹمی وار ہیڈ لے جانے کی صلاحیت بھی ہے۔

اس موقع پر شمالی کوریا کے راہنما کم جونگ اُن کے قریبی ساتھی چوے ریونگ اھے نے جو کہ ملک کے دوسرے سب سے طاقتور شخص سمجھے جاتے ہیں، خطاب کرتے ایک بار پھر امریکہ کو خبر دار کیا۔

،تصویر کا ذریعہReuters

،تصویر کا کیپشن

خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ شمالی کوریا کے سربراہ مزید جوہری تجربوں کا حکم دے سکتے ہیں

انھوں نے کہا: ’اگر امریکہ ہمارے خلاف لاپرواہی پر مبنی اشتعال انگیزی کرتا ہے، تو ہماری انقلابی قوت فوری طور پر اس کا سنگین جواب دے گی۔ ہم بھرپور جنگ کا اور جوہری جنگ کا اپنے انداز میں جوہری حملے سے جواب دیں گے۔

اس موقع پر پیانگ یانگ میں سنیچر کو فوجیوں، ٹینک اور اسلحے کی پریڈ کی گئی۔