عمارتیں جو کبھی بہترین فن تعمیر کا نمونہ تھیں

تصویر کے کاپی رائٹ ARCHIVE DANIEL FERNÁNDEZ-SHAW

سنہ 1970 میں وینزویلا اور اس کے دارالحکومت كراكس کا منظر بڑا ہی خوبصورت ہوا کرتا تھا۔ یہاں کی عمارتیں جدت اور اس کی شان کی علامت سمجھی جاتیں تھیں۔

كراكس کی کشادہ سڑکیں اور فن تعمیر کا نمونہ کہی جانے والی فلک بوس عمارتیں لوگوں کو اپنی طرف متوجہ کرتی تھیں۔

1960-70 کے عشرے میں خام تیل سے ہونے والی آمدنی کی وجہ سے كراكس کا شمار لاطینی امریکہ کے سب سے جدید شہروں میں ہوتا تھا۔ گذشتہ منگل کو كراكس کے قیام کے 450 برس مکمل ہوئے۔

تصویر کے کاپی رائٹ LUIS CHACÍN / IAM VENEZUELA ARCHIVE
Image caption ٹریزا کارینو تھیئٹر

جب 1983 میں ٹریزا كارینو تھیئٹر کا افتتاح ہوا تو اس وقت یہ لاطینی امریکہ کے بہترین فن تعمیر کے نمونوں میں سے ایک تھا لیکن 20 ویں صدی کے آغاز میں اس شہر کو صرف اسی وجہ سے اہمیت حاصل نہیں تھی بلکہ اس کی کئی دیگر وجوہات تھیں۔

آج یہ ملک معاشی تنگی کے دور سے گزر رہا ہے اور برسوں قبل تعمیر ہونے والی یہ عمارت اپنی بحالی نو کے لیے وقت سے نبردآزما ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ LUIS CHACÍN / ARCHIVE: IAM VENEZUELA
Image caption 32 منزلہ معروف سنیما ہال بولیور سینٹر

1950 میں تعمیر ہونے والے یہ 32 منزلہ ٹاورز شہر کی سب سے پہلی فلک بوس عمارتیں تھیں۔ كراكس شہر کے وسط میں تعمیر کیے گئے ان ٹوئن ٹاورز میں 32 منزلیں تھیں جو 100 میٹر سے بھی زیادہ بلند تھے۔

'ٹاورز آف دی سائلینس' کے نام سے معروف ان عمارتوں کو دیہی طرز زندگی سے جدید شہروں کی جانب بڑھنے کی پہلی کڑی کے طور پر سمجھا گیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ COPYRIGHT ARCHIVEPHOTOURBANA
Image caption 32 منزلہ سمون بولیور سینٹر

فن تعمیر کے ماہر ریکارڈو کاسٹیلو کے مطابق: 'ان دو عمارتوں نے كراكس کو پوری طرح سے تبدیل کر کے رکھ دیا۔ یہ شہر کی پہلی سب سے اونچی اور ملک کی سب سے پہلی سٹیل سے بنی ہوئی عمارتیں تھیں۔'

1954 میں سمون بولیور سینٹر کو شہر کا اہم لینڈ مارک مانا جاتا تھا۔ آج بھی یہ عمارت ملک کی سیاسی ہلچل اور انتظامی سرگرمیوں کا مرکز بنی ہوئی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ LUIS CHACÍN / ARCHIVE: IAM VENEZUELA
Image caption سمون بولیور سینٹر کے مشرق کی جانب سمون بولیور کا مجسمہ نصب کیا گيا ہے
تصویر کے کاپی رائٹ FILE URBAN PHOTOGRAPHY
Image caption دی ہیل کائیڈ کو ایک ایسے شاپنگ سینٹر کے طور پر تعمیر کیا گیا تھا کہ سینٹر کی سب سے اوپر کی منزل تک لوگ اپنی گاڑیوں میں بیٹھ کر آسانی سے جا سکیں

اس عمارت کو سنہ 1950 کی دہائی میں تعمیر کیا گیا تھا لیکن اسے مکمل نہیں کیا جا سکا۔ آج یہ ادھوری عمارت بولیوارين انٹیلیجنس سروس، سیبن کا ہیڈ کوارٹر ہے۔ یہاں کی جیلوں میں قیدیوں پر کئی طرح کے ظلم کیے گئے تھے۔

اس عمارت کو ملک کے سب سے بڑے تجارتی مرکز کے طور پر تعمیر کیا جا رہا تھا جس کے اندر چار کلومیٹر کا ریمپ موجود تھا۔ اس میں ہوٹل، تھیئٹر، دکانوں اور دفاتر کا تصور ایک ساتھ کیا گیا تھا۔

ریکارڈو کاسٹیلو بتاتے ہیں: 'یہ ایک شہر کے اندر ایک دوسرے شہر کو تعمیر کرنے کا ایک بڑا منصوبہ تھا۔'

تصویر کے کاپی رائٹ PIETRO PAOLINI / HELICOIDE PROJECT
Image caption دی ہیل کائیڈ

دی ہیلی کائیڈ کے ایک جانب رہائشی علاقہ ہے۔ 1959 میں جب چلی کے شاعر یہاں آئے تھے تو انھوں نے کہا تھا 'یہ کسی معمار کے دماغ سے پیدا ہوئی سب سے خوبصورت ساخت میں سے ایک ہے۔' فنڈز کی کمی کی وجہ سے اس کی تعمیر کے کام کو درمیان میں ہی روکنا پڑا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ FILE URBAN PHOTOGRAPHY
Image caption سنہ 2003 تک پراک سینٹرل ٹاور لاطینی امریکہ کی بلند ترین عمارتوں میں سے ایک تھی

1970 کے دور میں وینزویلا کو 'سعودی وینزویلا' کہا جاتا تھا۔ 1969 میں یہاں دس ٹاورز بنانے کے لیے کام شروع ہوا جس میں سے آٹھ رہائشی عمارتوں اور دو دفاتر کے لیے تعمیر کیے گئے۔

1983 میں جب یہ عمارتیں تیار ہوئیں تو انھیں 'شہر کی شناخت' کے طور پر دیکھا جانے لگا۔ ان عمارتوں کو کاروباری نوجوانوں کے لیے بنایا گیا تھا اور ان کے اندر تمام طرح کی سہولیات کا انتظام کیا گیا تھا، کچھ اس طرح سے کہ عمارت میں آنے کے بعد باہر جانے کی ضرورت محسوس نہ ہو۔

تصویر کے کاپی رائٹ LUIS CHACÍN / IAM VENEZUELA ARCHIVE
Image caption كراكس کی میٹرو ریل سروس یہاں رہنے والوں کی شان کی علامت بن گئی تھی

كراكس ایک وادی کے علاقے میں بسا ہوا ہے۔ خدشہ ظاہر کیا جارہا تھا کہ اقتصادی ترقی کے ساتھ ساتھ ملک کی نقل و حمل کی ضرورتیں بڑھتی جائیں گی اور گاڑیوں کی تعداد بڑھنے سے گلیوں میں ٹریفک کا مسئلہ پیدا ہوگا۔ اس مسئلہ کے حل کے لیے 1980 کی دہائی میں یہاں میٹرو ٹرین کا کام شروع کیا گیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ LUIS CHACÍN / IAM VENEZUELA ARCHIVE
Image caption كراكس میٹرو سٹیشنوں کے اندر اور باہر فن تعمیر کے خوبصورت نمونوں کو بھی رکھا گیا ہے
تصویر کے کاپی رائٹ URBAN ARCHIVE
Image caption 1977 میں میٹرو ریل کی لائنیں بچھانے کا کام شروع کیا گیا اور چند سالوں میں ہی ملک میں تین لائنیں بچھ چکی تھیں
تصویر کے کاپی رائٹ LUIS CHACÍN / IAM VENEZUELA ARCHIVE
Image caption كراكس کے سب وے کھلی جگہوں کی طرح بنائے گئے ہیں جہاں رش کے سبب لوگ پریشان نہ ہوں، لیکن اس دور کی خدمات پہلی جیسی نہیں ہیں

اسی بارے میں