برطانیہ: شہزادی کیٹ مڈلٹن امید سے ہیں

شاہی

،تصویر کا ذریعہGetty Images

،تصویر کا کیپشن

شہزادہ ولیم اور شہزادی کیٹ مڈلٹن اپنے بیٹے جارج اور بیٹی شارلٹ کے ہمراہ

کنسنگٹن پیلیس کے اعلامیہ کے مطابق ڈیوک آف کیمبرج شہزادہ ولیم اور ان کی اہلیہ ڈچز آف کیمبرج شہزادی کیٹ مڈلٹن اپنی تیسری اولاد کی توقع کر رہے ہیں۔

ملکہ برطانیہ اور پورا خاندان اس خبر سے 'نہایت خوش' ہے۔

35 سالہ کیتھرین شاہی محل میں ہی زیر نگرانی ہیں۔ ان کو ہائپرمیسس گراویڈارم (ایچ جی) نام کی بیماری ہے جس سے انھیں دوران زچگی ، پانی کی کمی ہونے کے ساتھ شدید متلی کی کیفیت مسلسل محسوس ہوتی ہے اور تھکن اور سر چکرانے کی بھی کیفیت 'معمول سے زیادہ' محسوس ہوتی ہے۔

ڈیوک اور ڈچز کے یہاں دو اولادیں ہیں جن میں سے بیٹا جارج جو اب چار برس کا ہے جبکہ بیٹی شارلٹ جو کہ دو سال کی ہیں۔

اس سے قبل بھی اپنی پہلی دونوں زچگیوں میں ڈچز آف کیمبرج اس بیماری سے متاثر ہوئی تھیں۔

،تصویر کا ذریعہPA

،تصویر کا کیپشن

متوقع اولاد تخت نشینی کے لیے چھٹے نمبر پر ہوگی

بی بی سی کے شاہی خاندان کے نمائندے نکولس وچل کا کہنا ہے کہ ڈیوک اور ڈچز یہ خبر کیتھرین کی بیماری کی وجہ سے دینے پر 'مجبور ہوئے ہیں۔'

'یہ ہفتہ ان کے لیے کافی اہمیت کا حامل ہے کیونکہ اسی ہفتے ان کا بڑا بیٹا جارج اپنا سکول شروع کرنے والا ہے۔ عام حالات میں یہ خیال تھا کہ ڈچز خود ان کو سکول لے جاتیں لیکن اب اس خبر کے بعد دیکھنا ہوگا کہ کیا ایسا ہوگا یا نہیں۔'

انھوں نے مزید بتایا کہ شاہی جوڑا اس سال موسم خزاں میں بیرون ممالک کا سفر کرنے کا ارادہ رکھتا تھا لیکن اب یہ اس بات پر منحصر ہوگا کہ ڈچز کیسا محسوس کر رہی ہیں۔'

متوقع اولاد تخت نشینی کے لیے چھٹے نمبر پر ہوگی ۔ سب سے پہلے شہزادہ چارلس، اس کے بعد شہزادہ ولیم، پھر شہزادہ جارج اور پھر شہزادی شارلٹ اس اولاد سے پہلے تخت نشینی کی حقدار ہوں گی۔