سمندری طوفان ’ارما‘ فلوریڈا کے جزائر پر

ارما تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption ارما طوفان میں ہواؤں کی رفتار 200 کلومیٹر فی گھنٹہ سے زیادہ رہنے کا خدشہ ہے

تازہ ترین اطلاعات کے مطابق سمندری طوفان ارما امریکی ریاست فلوریڈا کے ساحلی علاقوں پر پہنچ گیا ہے۔

گذشتہ چند گھنٹوں سے ارما کے جھونکے فلوریڈا کے جزائر سے ٹکرانا شروع ہو گئے تھے اور اب چوتھے درجے کے اس طوفان کا اگلا حصہ فلوریڈا کے زمینی علاقوں پر پہنچ گیا ہے۔

امریکی ریاست کے ساحل پر پانی کی سطح پہلے سے ہی بلند ہونا شروع ہو گئی ہے اور وہاں شدید طوفان کا خدشہ ہے۔

اس سے قبل ریاست سے 63 لاکھ لوگوں کو ساحلی علاقے کو چھوڑ دینے کے لیے کہا جا چکا ہے لیکن فلوریڈا کے گورنر رک سکاٹ کا کہنا ہے کہ اب اتنی تاخیر ہو چکی ہے کہ کسی کے لیے وہاں رکنا خطرے سے خالی نہیں۔

اس سے قبل یہ طوفان کیریبین جزائر سے ٹکرایا تھا جہاں اس کی زد میں آ کر 24 افراد ہلاک ہو گئے۔

طوفان ’ارما‘ کی تباہ کاریاں تصاویر میں

’ارما‘ کے بارے میں ہر چیز پر یقین نہ کریں

’ہزاروں بموں کی طاقت والا طوفان‘

اس کی شدت چار بتائی گئی تھی لیکن کیوبا سے ٹکرانے کے بعد اس کی شدت میں کمی آئی ہے اور اسے تین کیٹیگری میں رکھا گیا ہے۔

لیکن نیشنل ہریکین سنٹر (این ایچ ایس) کا کہنا ہے کہ فلوریڈا تک آتے آتے اس کی طغیانی میں اضافہ ہو جائے گا اور وہ پہلے جیسا تند و تیز ہو جائے گا۔

این ایچ ایس نے متنبہ کیا ہے اس طوفان سے 'جان کا خطرہ ہے' اور یہ فلوریڈا کے ساحل سے دور جزائر کے سلسلے کو اپنی زد میں لے چکا ہے۔

ہزاروں افراد ہنگامی کیمپوں میں پناہ لے رہے ہیں اور ہزاروں گھروں میں بجلی نہیں ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

ایمرجنسی ایجنسی فیما کے سربراہ بروک لونگ نے سی این این کو بتایا ہے کہ فلوریڈا کے 'کیز جزائر میں کوئی محفوظ مقام نہیں ہے۔ اور آپ اس جگہ کو خالی نہ کرکے اپنی جان کو خود خطرے میں ڈال رہے ہیں۔'

فلوریڈا کے گورنر نے کہا کہ 'اگر آپ خالی کرائی جانے والی جگہ پر ہیں جہاں سے آپ پناہ گاہ تک پہنچ سکتے ہیں تو آپ جلد از جلد وہاں پہنچ جائیں کیونکہ اب بہت وقت نہیں بچا ہے۔'

انھوں نے کہا: 'ہواؤں کے جھونکے آنے شروع ہو گئے ہیں اس لیے اب بہت وقت نہیں ہے کہ آپ وہا‎ں سے ڈرائیو کرکے دور پہنچ جائیں۔'

اطلاعات کے مطابق مغربی خلیجی ساحل کو سب سے زیادہ متاثر ہونے کا خدشہ ہے۔ طوفان کے راستے میں ٹیمپا اور سینٹ پیٹرز برگ جیسے شہر آ رہے ہیں۔

ٹیمپا خلیج میں 30 لاکھ آبادی ہے اور اسے سنہ 1921 کے بعد سے کسی بھی بڑے طوفان کا سامنا نہیں رہا ہے۔

اس سے قبل کریبیئن جزائر میں تباہی پھیلانے کے بعد طوفان ارما تند و تیز ہواؤں اور بارش کی صورت میں کیوبا سے ٹکرانے کے بعد امریکی ریاست کی جانب تیزی سے بڑھ رہا ہے۔

درجہ پانچ کا یہ طوفان سب سے پہلے کیوبا کے شمال مشرقی ساحلی علاقے کیمیگوے میں ٹکرایا۔ ارما کی سمت کی تبدیلی کی وجہ سے بہامس بڑی حد تک محفوظ رہا ہے۔

جمعے کو رات گئے ارما میں گذشتہ چند گھنٹوں میں مزید تیزی آئی اور وہ کیمیگوے آرکیپیلیگو سے ٹکرایا جو کہ وہاں کے ساحلی قصبوں اور دیہات کے لیے خطرہ تھا۔

کئی دہائیوں بعد یہ پہلا موقع ہے جب درجہ پانچ کے کسی طوفان نے کیوبا کو نشانہ بنایا ہو۔

امریکہ میں طوفان سے متعلق اطلاع دینے والے قومی مرکز کے مطابق گرینیچ کے معیاری وقت کے مطابق تین بجے ارما کے نتیجے میں 257 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے ہوائیں چل رہی تھیں۔

یہ طوفان اب جن صوبوں کو نشانہ بنا رہا ہے ان میں کیمیگوے، سیگو ڈے آویلا، سنتی پیریٹوس، ویلا کلارا اور میٹنساس شامل ہیں۔

ہوانا سے بی بی سی کے نامہ نگار وِل گرانٹ نے بتایا کہ بہت سے علاقوں میں بجلی معطل ہو گئی ہے اور دوردراز کے علاقوں اور قصبوں میں مواصلاتی رابطوں میں بھی مشکلات پیدا ہو رہی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

وہاں کے مکین پرامید ہیں کہ یہ طوفان اس جزیرے کو چھو کر فلوریڈا سے میامی کی جانب بڑھ جائے گا۔

خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق تقریباً 50 ہزار سیاح کیوبا چھوڑ کر جا چکے ہیں۔

ماہرین کے اندازے کے مطابق ارما اتوار کو فلوریڈا سے ٹکرائے گا۔

اس سے قبل امریکہ میں ہنگامی امداد کے وفاقی ادارے کے سربراہ نے خبردار کیا تھا کہ سمندری طوفان 'ارما' امریکی ریاست فلوریڈا یا اس کی ہمسایہ ریاستوں کے لیے 'تباہ کن' ثابت ہو سکتا ہے۔

کیا مزید طوفان آرہے ہیں؟

شمال میں طوفان ہوزے ارما کے پیچھے اٹلانٹک میں بڑھ رہا ہے اور یہ کیٹیگری فور کا طوفان 240 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے آ رہا ہے۔

یہ اسی راستے پر ہے جس پر ارما تھا اور وہاں پہلے ہی امدادی کارروائیاں متاثر ہوئی ہیں۔

بربودہ میں ارما کی وجہ سے 95 فیصد عمارتیں تباہ ہو گئیں۔

اطلاعات کے مطابق آنے والے گھنٹوں میں طوفان کی شدت میں تیزی سے کمی متوقع ہے۔

تاہم نامہ نگار کا کہنا ہے کہ یہ طوفان بہت سے گنجان آباد علاقوں میں سیلابی صورت حال پیدا کر سکتا ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں