اٹلی میں ساکن آتش فشاں کے دہانے میں گرنے سے والدین اور بچہ ہلاک

آتش فشاں

،تصویر کا ذریعہEPA

،تصویر کا کیپشن

ریسکیو اہکار موقع پر پہنچ تو گئے تاہم وہ بچے اور اس کے والدین کی کوئی مدد نہیں کر سکے

اٹلی کے جنوبی شہر نیپلز کے قریب ایک ساکن آتش فشاں کے دہانے میں گرنے کے نتیجے میں ایک لڑکا اور اس کے والدین ہلاک ہو گئے ہیں۔

اس واقعے کی مکمل تفصیلات دستیاب نہیں ہو سکیں، تاہم اٹلی کے میڈیا سے ملنے والی رپورٹوں میں کہا گیا ہے کہ یہ اس وقت ہوا جب وہ 11 سالہ لڑکا ممنوعہ علاقے میں چلا گیا۔

اس کے والدین نے اسے واپس کھینچنے کی کوشش کی تاہم اس دوران آتش فشاں کا دہانہ ٹوٹ گیا اور وہ پانچ فٹ گہرائی میں جا گرے۔ ابھی یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ آیا ان کی ہلاکت گیس کے بخارات سے ہوئی۔

ان کا سات سالہ بچہ آتش فشاں کے دہانے کی جانب نہیں بڑھا اور وہ بچ گیا۔

رپورٹوں کے مطابق یہ خاندان اٹلی کے شمالی علاقے تورن سے یہاں آیا تھا۔ دونوں والدین کی عمر 40 سال سے اوپر بتائی جاتی ہے۔

سولفاتارا پوٹسواولی ان آتش فشاؤں میں سے ایک ہے جو نیپلز کے مغرب میں ایک معروف سیاحتی مقام ہے۔

،تصویر کا ذریعہGoogle

،تصویر کا کیپشن

یہ اس ساکن آتش فشاں کا دہانہ ہے جہاں نظر آنے والی زنجیریں حادثے کا شکار ہونے والے خاندان تک پہنچنے کے لیے ریسکیو اہلکاروں نے استعمال کیں

یہ ایک ساکن آتش فشاں ہے جو 1198 میں آخری بار پھٹا تھا اور اب اس کا ہلکا سا دہانہ موجود ہے جہاں سے گندھک کے بحارات اور بھاپ نکلتی رہتی ہے۔

وہاں کام کرنے والے ایک مقامی ورکر نے کہا کہ انھوں نے اس سے بدترین حادثہ اپنی زندگی میں نہیں دیکھا۔

جہاں وہ لڑکا اور اس کے والدین گرے وہ جگہ دلدل جیسی ہے۔