ٹوائلٹ میں کیوں بہائے گئے ہزاروں یورو؟

ٹوائلٹ اور یورو تصویر کے کاپی رائٹ PA/Getty
Image caption ٹوائلٹ میں پانچ سو کے ہزاروں یورو نوٹ فلش کیے جانے کے معاملے کی تحقیقات جاری ہیں

سوئٹزرلینڈ کے پراسیکیوٹرز جینوا میں دسیوں ہزار یورو کے ٹوائلٹ میں فلش کر دیے جانے کے معاملے کی تفتیش کر رہے ہیں۔

پانچ سو یورو کے نوٹ یو بی ایس بینک اور اس کے پاس کے تین ریستورانوں کے ٹوائلٹس میں پائے گئے۔

اس سے ملحق پائپ لائنز کے پھنس جانے کے بعد اس کی مرمت اور صفائی پر مبینہ طور پر ہزاروں سوئس فرینک خرچ ہوئے ہیں۔

خیال رہے کہ یورو کے بڑے کرنسی نوٹ غیر قانونی سرگرمیوں کو فروغ دینے کے خدشے کے تحت سنہ 2018 میں واپس لیے جانے والے ہیں۔

بہر حال وہ قانونی ٹینڈر کے طور پر جائز رہے ہیں گے لیکن ان کے استعمال کے متعلق یورپی کمیشن کی تحقیقاتی رپورٹ کے بعد یورپیئن سینٹرل بینک اب ان کا چھپائی بند کر دے گا۔

سوئٹزرلینڈ میں نوٹ کو برباد کرنا جرم نہیں ہے لیکن استغاثہ نے کہا ہے کہ وہ اس غیر معمولی دریافت کے بعد ان حالات کی جانچ کر رہے ہیں جس کے تحت ایسا کیا گيا ہے۔

جنیوا کے دفتراستغاثہ سے ونسنٹ ڈیورنڈ نے بی بی سی کو بتایا: ’ہم یہ پتہ چلانے کی کوشش کر رہے ہیں کہ یہ نوٹ کہاں سے آئے اور کیا اس کے پس پشت کسی جرم کا ارتکاب تو نہیں ہوا۔‘

انھوں نے کہا کہ ’واضح طور پر یہ بہت حیران کن ہے۔‘

فرانسیسی زبان کے اخبار میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ اس سلسلے میں ایک وکیل سے پوچھ گچھ کی گئی ہے لیکن ڈیورنڈ نے اس مقامی رپورٹ پر کسی تبصرے سے اجتناب کیا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں