سعودی عرب میں انٹرنیٹ کالز پر پابندی ختم

سعودی عرب تصویر کے کاپی رائٹ AFP

سعودی عرب میں وائس اور ویڈیو کالز کے لیے استعمال کی جانے والی ایپس جیسے وٹس ایپ اور سکائپ پر سے پابندی بدھ کی رات نصف شب سے ختم ہو گئی ہے۔

یہ فیصلہ معیشت اور پیداوار کو فروغ دینے کے لیے کیا گیا ہے۔

وزارت کمیونیکیشن کا کہنا ہے کہ صارفین انٹرنیٹ وائس اوور انٹرنیٹ پروٹوکول (وی او آئی پی) کا استعمال بدھ سے کر سکیں گے۔ اس سے قبل سعودی عرب میں وی او آئی پی پر پابندی عائد تھی۔

سعودی عرب نے یہ کہہ کر ان وی او آئی پی استعمال کرنے والی ایپس پر پابدنی عائد کی تھی کہ یہ ’ضوابط‘ کی خلاف ورزی کر رہی ہیں۔

سعودی عرب کے لاپتہ شہزادے

خواتین کے حقوق پر سعودی ویڈیو وائرل

روئٹرز کے مطابق یہ پابندی سعودی وقت کے مطابق بدھ کی رات نصف شب سے ختم ہو جائے گی۔

کچھ دن قبل ہی سعودی عرب نے سنیپ چیٹ پر الجزیرہ کا اکاؤنٹ بلاک کر دیا تھا۔

قطر کا سعودی عرب سمیت عرب ریاستوں بحرین، مصر اور متحدہ عرب امارات کے ساتھ تنازع جاری ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

ان چاروں ممالک نے دہشت گردی کی حمایت کے الزامات کے تحت قطر کے ساتھ تعلقات منقطع کر رکھے ہیں۔

الجزیرہ کا کہنا ہے کہ یہ الزامات غلط ہیں۔ سنیپ چیٹ پر اکاؤنٹ بند ہونے کے بارے میں الجزیرہ کا کہنا تھا کہ یہ صحافت اور ان صحافیوں پر براہ راست حملہ ہے جو دنیا بھر میں صحیح طرح سے صحافتی فرائض سرانجام دے رہے ہیں۔

حکومت مخالف مظاہروں اور سنہ 2011 کے عرب انقلاب کے بعد سعودی عرب نے انٹرنیٹ کو سینسر کر دیا تھا۔ اس دوران لوگوں کی چار لاکھ ویب سائٹس تک رسائی پر پابندی لگ گئی تھی۔

تاہم اب وزارت کمیونیکیشن کا کہنا ہے کہ پابندی ہٹانے سے ڈیجیٹل کاروبار بڑھے گا اور آپریشنل قیمتوں میں کمی آئے گی۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں