دولتِ اسلامیہ کے سربراہ بغدادی کی ’نئی آڈیو جاری‘

تصویر کے کاپی رائٹ IS VIDEO

شدت پسند تنظیم دولتِ اسلامیہ کے شدت پسندوں نے بظاہر اپنے رہنما ابو بکر بغدادی کی آڈیو ریکارڈنگ جاری کی ہے۔

ابو بکر بغدادی کی آواز جیسی آواز میں دولتِ اسلامیہ کے سربراہ نے شمالی کوریا جاپان اور امریکہ کو دھمکیوں کا ذکر کیا گیا ہے۔

انھوں نے اس آڈیو میں دولتِ اسلامیہ کے گڑھ موصل میں جاری لڑائی کا بھی ذکر کیا۔ جس پر جولائی میں عراقی فورسزنے دوبارہ تسلط قائم کر لیا تھا۔

* روسی حملے میں البغدادی کی ممکنہ ہلاکت کی تحقیقات

* ’موصل سے پسپائی اختیار نہ کریں‘

ابو بکر بغدادی کے سر کی قیمت امریکہ نے ڈھائی کروڑ ڈالر مقرر کر رکھی ہے۔ انہیں جولائی سنہ 2014 کے بعد عوامی سطح پر نہیں دیکھا گیا۔ اس لیے ان کی موت کے بارے میں قیاس آرائیاں ہوتی رہتی ہیں۔

آخری مرتبہ انہیں موصل کے مسجد النوری میں ’خلافت‘ کا دعوی کرتے ہوئے دیکھا گیا تھا۔

اس آڈیو کے بارے میں دریافت کرنے پر دولتِ اسلامیہ کے خلاف برسرِ پیکار امریکی فورسز کے ترجمان ریان ڈلن کا کہنا تھا کہ ’ان کی موت کے بارے میں مصدقہ شواہد کے بغیر ہم یہی مان کر چل رہے ہیں کہ وہ زندہ ہیں۔‘

امریکی انٹیلیجنس ذرائع کا کہنا ہے کہ وہ ابھی اس آڈیو ریکارڈنگ کی تصدیق کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ تاہم انھوں نے واضح کیا کہ ہمارے پاس اس کی صداقت پر شک کرنے کی کوئی وجہ نہیں ہے۔‘

دولت اسلامیہ عام شہریوں اور قیدیوں کے ساتھ ظالمانہ تشدد کی وجہ سے بدنام ہے اور حالیہ عرصے میں اسے عراق اور شام میں شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

اسی بارے میں