لاس ویگس شوٹنگ: سٹیون پیڈک کی ’گرل فرینڈ‘ امریکہ پہنچ گئیں

Image caption اطلاعات کے مطابق پیڈک نے اتوار کی شوٹنگ سے قبل میریلو ڈینلی ایک لاکھ ڈالر منتقل کیے تھے۔

وہ خاتون جن کے بارے میں خیال ہے کہ وہ لاس ویگس میں حملہ کرنے والے شخص کی گرل فرینڈ ہیں امریکہ پہنچ گئی ہیں جہاں ان سے پوچھ گچھ کی جائے گی۔

اتوار کو لاس ویگس میں سٹیون پیڈک کی جانب سے کیے گئے حملے میں 58 افراد ہلاک اور 500 سے زیادہ زخمی ہوئے تھے۔

’سٹیون پیڈک جواری اور سابق اکاؤنٹینٹ تھا‘

لاس ویگس حملہ آور نے ہوٹل میں کیمرے لگا رکھے تھے

میریلو ڈینلی اس حملے کے وقت فلپائن میں تھیں اور امریکہ واپس پہنچتے ہی منگل کی شب ان سے وفاقی ایجنٹس نے ہوائی اڈے پر ملاقات کی۔

اطلاعات کے مطابق پیڈک نے اتوار کو حملے سے قبل میریلو ڈینلی کو فلپائن میں ایک لاکھ ڈالر منتقل کیے تھے۔

امریکی تاریخ کے اس بدترین حملے نے امریکہ میں اسلحے کے کنٹرول کی بحث ایک بار پھر چھیڑ دی ہے تاہم امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ ابھی اس بارے میں بات کرنے کا وقت نہیں ہے۔

اس سے قبل انھوں نے پیڈک کو 'بیمار اور ذہنی مریض' قرار دیا تھا۔

تاہم امریکی ہوم لینڈ سکیورٹی کے ایک عہدیدار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر خبررساں ادارے روئٹرز کو بتایا کہ پیڈک کی ذہنی بیماری کا کوئی سراغ نہیں ملا۔ نہ ہی پولیس کو پیڈک کے کسی مقامی یا بین الاقوامی دہشت گرد گروہ سے روابط کا پتہ چل سکا ہے۔

اس سے قبل پیڈک کا کوئی مجرمانہ ریکارڈ نہیں تھا۔

میریلو ڈینلی ستمبر سے ہی فلپائن میں تھیں۔ ان کی بہنوں نے ایک آسٹریلوی خبر رساں ادارے کو بتایا کہ میریلو ڈینلی کو فلپائن کے اس دورے کے بارے میں اس وقت تک معلوم نہیں تھا جب تک سٹیون پیڈک نے انھیں ٹکٹ نہیں لے دیا۔ ان کا کہنا تھا ’ایسا معلوم ہوتا ہے کہ انھیں اپنی منصوبہ بندی میں مداخلت سے روکنے کے لیے پیڈک نے ملک سے باہر بھیج دیا تھا‘۔

حکام کا کہنا ہے کہ سٹیون پیڈک نے مینڈیلے بے ہوٹل اور کسینو میں جب کمرہ لیا تو انھوں نے اپنی گرل فرینڈ کے دستاویزات استعمال کیے تھے۔

امریکی میڈیا کے مطابق مینڈیلے بے ہوٹل کی 32 ویں منزل کے اس کمرے سے جہاں سٹیون پیڈک نے جمعرات کی رات چیک ان کیا تھا 19 رائفلوں سمیت سینکٹروں گولیاں برآمد ہوئی ہیں۔

خیال رہے کہ گذشتہ برس جون میں فلوریڈا کے ایک نائٹ کلب میں ہونے والی فائرنگ کے نتیجے میں 49 سے زیادہ افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں