پاناما پیپرز والی صحافی بم دھماکے میں ہلاک

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں
ڈیفنی کی کار کے ٹکڑے قریبی کھیتوں میں بکھر گئے

مالٹا کی مشہور صحافی اور بلاگر جنھوں نے پاناما پیپرز کی تحقیقات میں اہم کردار ادا کیا تھا، ایک کار بم دھماکے میں ہلاک ہو گئی ہیں۔

53 سالہ ڈیفنی کیروانا گیلیزیا بیدنجا میں اپنے گھر کے قریب ہی تھیں جب ان کی گاڑی زوردار دھماکے سے پھٹ گئی۔

دھماکہ اتنا زور دار تھا کہ ان کی کار کے کئی ٹکڑے ہو گئے اور وہ قریبی کھیتوں میں بکھر گئے۔

ڈیفنی گیلیزیا کے بیٹے نے الزام عائد کیا ہے کہ ان کی والدہ کو ان لوگوں نے قتل کروایا جن کی کرپشن کو انہوں نے بےنقاب کیا تھا۔

ڈیفنی کیرونا گیلیزیا کے بلاگ اتنے مقبول تھے کہ ان کے قارئین کی تعداد ملک کے تمام اخبارات کے مجموعی قارئین سے بھی زیادہ تھی۔ حال ہی میں مشہور سیاسی جریدے پولیٹکو نے ڈیفنی گیلیزیا کو 'ون ویمن وکی لیکس' قرار دیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Linkedin
Image caption ڈیفنی گیلیزیا کو اس وقت ہلاک کیا گیا جب وہ گھر کے قریب کار چلا رہی تھیں

ڈیفنی گیلیزیا کے بلاگز ملک کی اسٹیبلشمنٹ اور انڈر ورلڈ کے ممبران کے لیے پریشان کن تھے اور حال ہی میں انھوں نے وزیر اعظم اور ان کے دو قریبی ساتھیوں کی مبینہ کرپشن کی نشاندھی کی تھی جنھوں نے اپنی دولت آف شور کمپنیوں میں چھپا رکھی تھی۔

کسی گروہ یا فرد نے ڈیفنی گیلیزیا کی موت کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔

مالٹا کے وزیر اعظم جوزف مسکت نے ڈیفنی گیلیزیا کی موت کی مذمت کی ہے۔

وزیر اعظم جوزف مسکت نے ایک ٹیلی ویژن بیان میں کہا کہ ہر کوئی جانتا ہے کہ ڈیفنی گیلیزیا ان کی ذاتی اور سیاسی طور پر سخت ترین نقاد تھیں، لیکن وہ ان کی موت کی پرزور مذمت کرتے ہیں کیونکہ یہ ملک میں آزادی رائے پر حملہ ہے۔

انھوں نے کہا ڈیفنی گیلیزیا نہ صرف ان کی نقاد تھی بلکہ دوسرے لوگ بھی ان کی تنقید کی زد میں تھے۔ انھوں نے کہا کہ وہ ڈیفنی گیلیزیا کے قاتلوں کو انصاف کے کٹہرے تک لائیں گے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں