سعودی عرب کا پانچ سو ارب ڈالر کی لاگت سے رہائشی اور کاروباری مرکز تعمیر کرنے کا اعلان

سعودی ولی عہد تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

سعودی عرب نے پانچ سو ارب ڈالر کی لاگت سے ایک نیا شہر اور کاروباری زون تعمیر کرنے کے منصوبے کا اعلان کیا ہے۔

سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان نے این ای او ایم (نیوم) نامی منصوبے کے بارے میں بتایا کہ ملک کے شمال مغربی علاقے میں 26 ہزار پانچ سو مربع کلومیٹر پر محیط ہو گا۔

سعودی عرب: سٹیڈیم میں ’نامناسب لباس‘ پر پابندی

’عوامیہ میں اب بظاہر امن لیکن مستقبل غیر واضح‘

اس سیلفی سے چند سعودیوں کو نفرت کیوں؟

اس منصوبے کا اعلان سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں منعقدہ بین الاقوامی بزنس کانفرنس میں کیا گیا۔

منصوبے کو مصر اور اردن تک توسیع دینے کا اعلان بھی کیا گیا تاہم دونوں ممالک کی جانب سے تاحال اس پر کوئی ردعمل سامنے نہیں آیا ہے۔

اربوں ڈالر کی لاگت سے تیار ہونے والے اس منصوبے میں نو شعبوں پر توجہ دی جائے گی جس میں خوراک، ٹیکنالوجی، توانائی اور پانی شامل ہے۔

یہ منصوبہ ولی عہد محمد بن سلمان کے اس منصوبے کا حصہ ہے جس کے تحت ملک کا انحصار تیل سے حاصل ہونے والی آمدن پر کم کرنا ہے۔

اس سے پہلے اگست میں سعو دی عرب نے سیاحوں کے لیے ایک بڑے پروجیکٹ کا آغاز کیا تھا جس کے نتیجے میں بحرِ احمر کے ساتھ موجود 50 جزیرے لگژری سیرگاہوں میں بدل جائیں گے اور اس منصوبے سے امید کی جا رہی ہے کہ اس سے غیر ملکی سیاح اور مقامی افراد کو متوجہ کرنے کے ساتھ ساتھ سعودی معیشت کو فروغ دینے میں بھی مدد ملے گی۔

بی بی سی کے معاشی امور کے نامہ نگار اینڈریو واکر کے مطابق محمد بن سلمان کے ویژن پر یقیناً سوال بھی اٹھتے ہیں کہ یہ منصوبہ کتنا حقیقی ہے۔

سعودی عرب کے بارے میں مزید پڑھیے

سعودی عرب: شاہی محل کے دروازے پر فائرنگ، دو ہلاک

امریکہ سعودی عرب کو دفاعی میزائل نظام فراہم کرے گا

سعودی عرب ہندو خواتین کے لیے ’سنہری جیل‘

سعودی حکام کا کہنا ہے کہ این ای او ایم (نیوم) نامی منصوبے کو ریاست کے علاوہ، مقامی اور بین الاقوامی سرمایہ کاروں کی طرف سے سرمایہ فراہم کیا جائے گا۔

بیان کے مطابق این ای او ایم (نیوم) نامی منصوبے سے سال دو ہزار تیس تک سعودی معیشت میں ایک سو ارب ڈالر تک حصہ ہو گا اور یہ بحرِ احمر کے ساحل اور عقابہ خلیج پر ایک پرکشش منزل ہو گا جو ایشیا، افریقہ اور یورپ سے جوڑے گا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں