نوکری چھوڑنے کے پانچ عجیب و غریب انداز

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption کچھ لوگ ملازمت کے آخری دن کو یادگار بنانا چاہتے ہیں

جمعرات کو ایک عجیب واقعہ ہوا جب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا ٹوئٹر اکاؤنٹ اچانک ہی ڈلیٹ ہو گیا اور تقریباً گیارہ منٹ بعد اسے بحال کیا گیا۔ اس واقعہ کے بعد سوشل میڈیا پر خوب باتیں ہونے لگیں۔ کچھ کو لگا کہ شاید انکا اکاؤنٹ ہیک کر لیا گیا تو کچھ کو لگا تکنیکی خرابی ہو گئی۔

لیکن جب اس واقعہ کی حقیقت سے پردہ اٹھا تو معلوم ہوا کہ یہ کارنامہ ٹوئٹر کے ایک ملازم کا تھا۔اس شخص کا ٹوئٹر کمپنی میں ملازمت کا آخری دن تھا اور نوکری چھوڑنے سے پہلے اس نے اس دن کو یادگار بنا دیا۔

نوکری چھوڑنا ہمارے کریئر کا ایک بڑا اور اہم فیصلہ ہوتا ہے۔ کئی مرتبہ دفتر سے پریشان ہوکر، تنخواہ کم ہونے پر یا پھر ساتھیوں کے ساتھ تال میل ٹھیک نہ ہونے پر نوکری چھوڑنے کا فیصلہ کرنا پڑتا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption ایک شخص نے پرواز کے درمیان ہی نوکری چھوڑ دی

لیکن کئی مرتبہ ہم خوشی خوشی نوکری چھوڑتے ہیں یا تو ریٹائرمنٹ پر یا بہتر نوکری مل جانے پر، حالات چاہے جو بھی ہوں سب سے اہم یا مشکل ہوتی ہے اپنے باس یا ساتھیوں کو نوکری چھوڑنے کی خبر دینا۔

ہم آپکو نوکری چھوڑنے کے سب سے عجیب و غریب پانچ واقعات بتاتے ہیں۔

2010 میں سٹیون سلیٹر نام کے ایک سٹیورڈ پرواز کے دوران مسافروں سے اتنے پریشان ہوئے کہ انھوں نے پیٹربرگز سے نیویارک جانے والی پرواز کے دوران ہی نوکری چھوڑ دی۔

سٹیون مسافروں کو بار با رسمجھا تے رہے کہ وہ زیادہ سامان لیکر جہاز پر سوار نہ ہوں کئی لوگوں نے انکی درخواست کو نظر انداز کیا۔ اس کے بعد سٹیون نے پرواز کے درمیان ہی انٹر کام پر اپنی ملازمت چھوڑنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ 'ان سبھی کا بہت بہت شکریہ جنہوں نے پچھلے بیس سال تک میرا ساتھ دیا'۔ حالانکہ اس طرح نوکری چھوڑنے پر انہیں اپنی کمپنی کو دس ہزار ڈالر کا جرمانہ ادا کرنا پڑا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption ایک خاتون نے یو ٹیوب پر ڈانس کی ویڈی بنا کر نوکری چھوڑنے کا اعلان کیا

2013 میں کرس نام کے ایک شخص نے جو ہومز ہوائی اڈے پر سرحدی فوج میں کام کرتے تھے ملازمت چھوڑنے کے اپنے فیصلے کا اعلان ایک کیک کے ذریعے کیا۔ کرس کا کہنا تھا کہ وہ اپنی نوکری سے بیزار ہو چکے تھے اب وہ کیک بنانے کا کاروبار کرتے ہیں۔

ماریا شفرین ایک اینی میٹر کا کام کرتی تھیں انہوں نے اپنی نوکری چھوڑنے کی خبر یو ٹیوب پر ایک ڈانس ویڈیو پوسٹ کر کے دی۔

انکا کہنا تھا کہ یہ ڈانس میرے باس کے لیے ہے جنہیں ہمیشہ اس بات کی فکر رہتی تھی کہ ہر ویڈیو کو کتنے لوگوں نے دیکھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ JOSEPH DEFRANCESCO
Image caption ایک شخص نے بینڈ باجے کے ساتھ استعفے کا اعلان کیا

2011 میں روہڈز آئلینڈ میں ایک ہوٹل کے ملازم نے جب نوکری چھوڑنے کا فیصلہ کیا تو پورے بینڈ باجے کے ساتھ آئے اور باس کے ہاتھ میں استفعی تھما دیا۔ انکا یہ ویڈیو بھی وائرل ہو گیا اور اسے سات لاکھ لوگوں نے دیکھا۔ آج وہ ایک نئے بینڈ کے ساتھ کام کرتے ہیں اور گانے بھی گاتے ہیں۔

آسٹریلیا کی ایک اخبار میں کام کرنے والے لیوک بینج کو جب معلوم ہوا کہ انکی جگہ کسی اور کو رکھا جا رہا ہے تو انھوں نے نوکری چھوڑنے کا عجیب طریقہ اپنایا اخبار کے ساتھ اپنے آخری ایڈیشن کو ہائی جیک کر کے انھوں اس پر فحش تصاویر لگا دیں اور فرنٹ پیج پر اپنا برہنہ کارٹون بنا کر لگایا۔