'غلط' ٹریزا مے کو ٹرمپ کی معذرت کا انتظار

تصویر کے کاپی رائٹ PA

برطانوی کاؤنٹی ویسٹ سسیکس کے قصبے بوگنور سے تعلق رکھنے والی خاتون ٹریزا مے سکریوینر کہتی ہیں کہ انھیں امریکی صدر ٹرمپ کی ٹویٹ کے بعد وائٹ ہاؤس کی طرف سے معذرت کا انتظار ہے۔

اس ٹویٹ میں ٹرمپ نے برطانوی وزیرِ اعظم ٹریزا مے کی بجائے غلطی سے ٹریزا مے سکریوینر کو مخاطب کر کے کہا تھا کہ ’میری بجائے برطانیہ میں دہشت گردی پر توجہ دیں۔‘

اسی بارے میں

’مجھ پر نہیں، برطانیہ میں دہشتگردی پر توجہ دیں‘

ڈونلڈ ٹرمپ نے ویڈیو شیئر کر کے غلط کیا: برطانوی وزیراعظم

مس سکریوینر نے کہا کہ اس کے بعد سے انھیں بڑی تعداد میں لوگوں نے پیغامات بھیجے ہیں لیکن 'اگر میں مشہور ہونا چاہتی تو میں (ٹی وی پروگرام) ایکس فیکٹر میں چلی جاتی۔'

41 سالہ سکریوینر نے کہا کہ 'انھیں ٹویٹ کرنے سے پہلے سوچنا چاہیے۔ میں اور ٹریزا مے بےحد مختلف ہیں۔ ہمارے پروفائل بالکل مختلف ہیں۔ وہ ملک چلا رہی ہیں، میں بوگنور میں بچوں کی ماں ہوں۔'

انھوں نے کہا کہ وہ ٹوئٹر پر اپنا نام تبدیل نہیں کریں گی۔ انھوں نے 2009 میں اکاؤنٹ بنایا تھا جب ٹریزا مے وزیرِ اعظم نہیں بنی تھیں۔

ٹریزا مے سکریوینر کے صرف چھ فالوئر ہیں، جب کہ وزیرِ اعظم ٹریزا مے کے فالوئرز کی تعداد سوا چار لاکھ سے زائد ہے۔ اس کے علاوہ ان کے اکاؤنٹ پر ان کی تصویر لگی ہے اور ان کی شکل برطانوی وزیرِ اعظم سے خاصی مختلف ہے۔

انھوں نے کہا: 'یہ بات حیرت انگیز ہے کہ دنیا کے سب سے طاقتور شخص نے غلط بٹن دبا دیا۔ میں وائٹ ہاؤس کی جانب سے معذرت کی فون کال کا انتظار کر رہی ہوں۔

'مجھے خوشی ہے کہ انھوں نے فون کر کے یہ نہیں کہا کہ میں شمالی کوریا کے خلاف جنگ شروع کرنے جا رہا ہوں۔'

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter

یہ پہلا موقع نہیں ہے کہ صدر ٹرمپ، جن کے چار کروڑ 40 لاکھ فالوئرز ہیں، نے ٹوئٹر پر کسی کو ٹیگ کرنے میں غلطی کی ہو۔ جنوری میں انھوں نے اپنی بیٹی ایوانکا ٹرمپ کی بجائے برطانیہ کی ایک خاتون کو ٹیگ کر لیا تھا۔

اس خاتون نے جواب میں لکھا تھا: ’میرا مشورہ ہے کہ آپ ٹوئٹر پر زیادہ احتیاط برتیں اور ماحولیاتی تبدیلی کے بارے میں کچھ سیکھیں۔‘

اسی بارے میں