بریگزٹ: یورپی یونین کا مذاکرات کے دوسرے مرحلے کی جانب بڑھنے پر اتفاق

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

بریگزٹ کے حوالے سے یورپی یونین کا مذاکرات کے دوسرے مرحلے کی جانب بڑھنے پر اتفاق ہو گیا ہے تاہم انھوں نے برطانیہ سے مستقبل کے تعلقات کے حوالے سے مزید وضاحت طلب کی ہے۔

اگلے سال میں جو پہلا معاملہ زیرِ بحث آئے گا وہ سنہ مارچ 2019 میں برطانیہ کے یورپی یونین سے انخلا کے بعد منتقلی کے دو سالہ عمل کی تفیصلات ہیں۔

تجارت اور سلامتی کے حوالے سے مذاکرات مارچ میں ہوں گے۔

یہ بھی پڑھیے

ٹرمپ کے صدر بننے اور بریگزٹ کے بعد یورپ امریکہ، برطانیہ پر انحصار نہیں کر سکتا:میرکل

فوری انتخابات سے بریگزٹ میں آسانی ہو گی: برطانوی وزیرِ اعظم ٹریزا مے

برطانوی وزیرِ اعظم ٹریسا مے نے کہا مذاکرات میں پیش رفت ایک اہم قدم ہے تاہم جرمنی کی چانسلر آنگیلا میرکل نے کہا ہے کہ ’یہ مزید مشکل ہوتا جائے گا۔‘

یورپین کونسل کے صدر ڈونلڈ ٹسک نے یہ خبر دی کہ 27 یورپی ممالک کے رہنما بخوشی بریگزٹ مذاکرات کے دوسرے مرحلے پر بات کرنے کو تیار ہیں۔

انھوں نے ٹریسامے کو اس مرحلے تک پہنچنے پر مبارکباد دی اور کہا کہ یورپی یونین اگلے مرحلے کے لیے اندورنی تیاری بھی کرے گا تاہم وہ چاہتے ہیں کہ ’برطانیہ بھی اپنے نظریے کی مزید وضاحت کرے۔‘

مارچ 2019 میں برطانیہ کے یورپی یونین سے انخلا پر معاہدہ طے پا جانے کے بعد انھوں نے کہا کہ ’اگلا مرحلہ زیادہ مشکل اور توجہ طلب ہوگا۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption یورپین کونسل کے صدر ڈونلڈ ٹسک نے یہ خبر دی کہ 27 یورپی ممالک کے رہنما بخوشی بریگزٹ مذاکرات کے دوسرے مرحلے پر بات کرنے کو تیار ہیں۔

ٹریسامے نے کہا کہ ’فریقین کو مستقبل کے تعلقات پر بات چیت کا فوری آغاز کر دینا چاہیے اور امید ہے کہ اس حوالے تیزی سے ہونے والی پیش رفت اس معاملے کو ایک یقین بخشے گی۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ’یہ اس بریگزٹ کے ہموار اور باترتیب عمل کی جانب اہم قدم ہے جس کے لیے جون 2016 میں لوگوں نے ووٹ کیا تھا۔ ‘

’برطانیہ اور یورپی یونین نے دکھایا ہے کہ عزم اور ثابت قدمی سے ہم کیا کچھ حاصل کر سکتے ہیں۔‘

اسی بارے میں