سٹیو بینن کی طرف سے ’غداری‘ کا بیان تبدیل کرنے کی کوشش

سٹیو بینن تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے سابق چیف سٹریٹیجسٹ سٹیو بینن نے اپنے اس بیان کو تبدیل کرنے کی کوشش کی ہے جس میں انھوں نے امریکی صدر کے بیٹے ڈونلڈ جونئیر کو ’غدار‘ کہا تھا۔

یہ الزام صحافی مائیکل وولف کی کتاب 'فائر اینڈ فیوری: انسائیڈ دی ٹرمپ وائٹ ہاؤس' میں سامنے آیا تھا۔

سٹیو بینن سے منسوب بیان میں کہا گیا تھا کہ صدر ٹرمپ کے بیٹے کی روسی حکام سے جون 2016 میں ہونے والی ملاقات 'غداری' کے زمرے میں آتی ہے۔

تاہم اب اتوار کے روز سٹیو بینن نے کہا ہے کہ ان کا اشارہ پال منافورٹ کی جانب تھا جو اس وقت وہاں موجود تھے۔

یہ بھی پڑھیے

ٹرمپ: نئی کتاب میں 11 چونکا دینے والے انکشافات

’غداری‘ کے بیان پر ٹرمپ برہم، ’بینن کا دماغ خراب ہے‘

ٹرمپ نے سٹیو بینن کو قومی سلامتی کونسل سے ہٹا دیا

امریکہ: ڈونلڈ ٹرمپ کی ٹیم کے دو اہم عہدوں پر تقرریاں

واضح رہے کہ امریکی سینیٹ، ایوان نمائندگان اور خصوصی کونسل تمام مل کر صدارتی انتخاب میں مبینہ روسی مداخلت کی تحقیقات کر رہے ہیں۔ تاہم ان الزامات کو روس اور ڈونلڈ ٹرمپ مسترد کرتے آئے ہیں۔

سٹیو بینن کا تازہ بیان پہلے نیوز ویب سائٹ ایکسیئس میں شائع ہوا جس میں انھوں نے ڈونلڈ جونیئر کو ’اچھا انسان اور حب الوطن‘ کہا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

بیان میں ان کا کہنا تھا کہ ’میرا اشارہ پال منافورٹ کی جانب تھا جو کہ مہم چلانے کے ماہر ہیں اور جانتے ہیں کہ روسی کیسے کام کرتے ہیں۔‘

’ان کو معلوم ہونا چاہیے تھا کہ وہ چالاک ہیں اور ہمارے دوست نہیں۔ میں دوہراتا ہوں کہ میرا وہ بیان ڈونلڈ جونیئر کے بارے میں نہیں تھا۔‘

خیال رہے کہ سٹیو بینن کے اس بیان کے سامنے آنے کے بعد امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا تھا کہ جب سے ان کے سابق ساتھی سٹیو بینن کو وائٹ ہاؤس کی نوکری سے فارغ کر دیا گیا ہے اس کے بعد سے ان کا 'دماغ خراب ہو گیا ہے'۔

صدر ٹرمپ نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ: 'سٹیو بینن کا مجھ سے اور میری صدارت سے کوئی واسطہ نہیں۔ جب سے اسے نوکری سے نکالا گیا ہے اس کے بعد سے اس کا دماغ بھی خراب ہو گیا ہے۔'

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں