جنوبی کوریا کے ہسپتال میں آتشزدگی، ہلاکتیں 39 ہو گئیں

A firefighter walks out of a burnt hospital in Miryang, South Korea تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption یہ گذشتہ دہائئ میں لگنے والے بدترین آگ ہے

جنوبی کوریا کے شہر مریانگ میں حکام کا کہنا ہے کہ ایک ہسپتال میں آتشزدگی کے بعد مرنے والوں کی تعداد 39 ہو گئی ہے۔

مریانگ جنوبی کوریا کے جنوب مشرق میں واقع ہے۔

مقامی میڈیا کا کہنا ہے کہ فائر فائٹرز کے مطابق امراض قلب کے سیجونگ ہسپتال میں آگ ایمرجنسی روم سے شروع ہوئی جہاں پر زیادہ تر عمر رسیدہ افراد کی دیکھ بھال کی جاتی ہے۔

اطلاعات کے مطابق ہسپتال کی عمارت میں 200 مریض موجود ہیں۔

جنوبی کوریا کی حالیہ تاریخ کے اس بدترین آتشزدگی میں درجنوں لوگ زخمی ہوئے ہیں مزید ہلاکتوں کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption خیال ہے کہ آگ ایمرجنسی روم سے شروع ہوئی
تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption جس وقت آگ لگی ہسپتال کے اندر اور اس کے ساتھ موجود نرسنگ ہوم میں متعدد مریض اور لوگ موجود تھے

آگ کنٹرول کرنے والے شعبے کے سربراہ چوئی من کا کہنا ہے کہ آگے کیسے لگی ابھی یہ معلوم نہیں ہو سکا ہے۔

خبر رساں ادارے نے چوئی منگ کے حوالے سے بتایا ہے کہ متاثرین میں مریض اور نرسنگ ہوم کا عملہ دونوں شامل ہیں جن میں سے کچھ کی موت دوسرے ہسپتال میں منتقل ہونے کے دوران ہوئی۔

ان کا کہنا ہے کہ آگ مقامی وقت کے مطابق صبح ساڑھے سات بجے لگی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption دھویں کے گہے بادلوں نے عمارتوں کو گھیرے میں لے رکھا ہے

خبر رساں ادارے ینہپ کا کہنا ہے کہ 93 مریضوں اور نرسگ سٹاف میں شامل افراد کو بحفاظت نکال لیا گیا ہے۔

مریانگ دارالحکومت سیئول سے 270 کلومیٹ کی دوری پر واقع ہے۔ اس ہسپتال میں 200 بیڈ ہیں اور یہ سنہ 2008 سے کام کر رہا ہے۔

ملک کے وزیراعظم کی سربراہی میں ایک ہنگامی اجلاس بھی منعقد ہو رہا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption آگ لگنے کی وجوہات ابھی معلوم نہیں ہو سکی

متعلقہ عنوانات