صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی تنقید کے بعد ایف بی آئی کے ڈپٹی ڈائریکٹر مستعفی

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

امریکی وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف بی آئی کے ڈپٹی ڈائریکٹر جن پر صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کئی بار سیاسی تعصب کا الزام لگایا تھا اپنے عہدے سے مستعفی ہو گئے ہیں۔

سی بی ایس نیوز کے مطابق اینڈریو مک کیب نے مارچ میں ریٹائر ہونا تھا لیکن انھیں زبردستی اپنا عہدہ چھوڑنا پڑا۔

اس سے قبل گذشتہ ہفتے ایسی خبریں سامنے آئی تھیں کہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ چاہتے ہیں کہ انڈریو مک کیب اس عہدے پر نہ رہیں۔

روس نے مدد کی یا نہیں، ٹرمپ حلفیہ بیان دینے پر تیار

فائر اینڈ فیوری پڑھنے پر ٹرمپ کےحامیوں کا غم و غصہ

’ٹرمپ شروع ہی سے کومی کو برطرف کرنا چاہتے تھے‘

وائٹ ہاؤس کی پریس سیکریٹری سارہ ہکیبی سینڈرز نے پیر کو پریس بریفنگ کے دوران کہا کہ ’یہ فیصلہ وائٹ ہاؤس کی جانب سے نہیں کیا گیا ہے۔‘

انھوں نے مزید کہا کہ ’صدر اس فیصلے کا حصہ نہیں ہیں۔‘

انڈریو مک کیب گذشتہ مئی میں صدر ٹرمپ کی جانب سے جیمز کومی کو نکالنے کے بعد ایف بی آئی کے قائم مقام ڈائریکٹر بن گئے تھے۔

اس کے بعد امریکی صدر کی جانب سے کرسٹوفر ورے کا نام بطور ایف بی آئی ڈائریکٹر سامنے آیا جنھیں اگست میں سینیٹ نے منظور کر لیا۔

واشنگٹن ڈی سی کے نیوز ادارے ایگزیو نے گذشتہ ہفتے رپورٹ کیا تھا کہ کرسٹوفر ورے نے خبردار کیا ہے کہ ان پر اٹارنی جنرل کی جانب سے انڈریو مک کیب کو عہدے سے ہٹانے کے لیے دباؤ ڈالا جا رہا ہے اس لیے وہ اپنے عہدہ سے مستعفی ہو جائیں گے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں