مغربی افریقہ میں 22 انڈین شہریوں سمیت بحری جہاز لاپتہ

بحری قزا‍ق تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption مغربی افریقی سمندر میں صومالیہ کا علاقہ بحری قزاقوں کی وجہ سے خطرناک تصور کیا جاتا ہے

مغربی افریقہ کے خلیج گنی میں بینن ساحل سے دور سمندر میں ایک آئل ٹینکر لاپتہ ہو گیا ہے جس پر 22 انڈین شہری بھی موجود تھے۔

پاناما میں رجسٹرڈ میرین ایکسپریس نامی اس جہاز سے جمعرات سے کوئی رابطہ نہیں ہو سکا ہے۔

یہ جہاز کے غائب ہونے کا ایک ماہ سے کم عرصے میں دوسرا واقعہ ہے۔ اس سے قبل اسی علاقے میں سمندر سے ایک دوسرا بحری جہاز غائب ہوا تھا جسے بحری قزاقوں نے اغوا کر لیا تھا۔

بین الاقوامی میری ٹائم بیورو نے بتایا کہ بینن کی بحریہ میرن ایکسپریس کو تلاش کر رہی ہے۔ ان کے مطابق ٹینکر پر 13،500 ٹن تیل ہے۔

انڈیا کی وزیر خارجہ سشما سوراج کا کہنا ہے کہ حکومت ہند اس خطے کے حکام سے رابطے میں ہے۔

اس جہاز کا انتظام ہانگ کانگ میں قائم اینگلو ایسٹرن کمپنی کے ہاتھوں میں ہے۔

بی بی سی کے نمائندے ول راس کا کہنا ہے کہ افریقہ کے سمندر میں صومالیہ کا علاقہ سب سے زیادہ خطرناک ہے لیکن بین الاقوامی بحری جہازوں کی تعیناتی کے بعد حالات میں قدرے بہتری آئی ہے۔

گذشتہ سال مغربی افریقہ کے سمندری علاقوں میں جہازوں پر زیادہ حملے نظر آئے ہیں جس میں ایک ہفتے میں ایک سے زیادہ حملے دیکھے گئے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں