کویت: ملازمہ کی لاش فریزر میں چھپانے والا شخص گرفتار

ڈیما فیلز کی موت پر دکھ

،تصویر کا ذریعہEPA

،تصویر کا کیپشن

ڈیمافیلز کی لاش ملنے کے بعد فلپائن ایک ہزار فلپائنی شہریوں کو واپس وطن جانے میں مدد کی تھی

لبنان میں پولیس نے اس لبنانی شہری کو گرفتار کر لیا ہے جس پر الزام ہے کہ اس نے کویت میں اپنی فلپائنی ملازمہ کو قتل کر کے اس کی لاش کو فریزر میں چھپا دیا تھا۔

فلپائن کی وزارت خارجہ نے کہا ہے کہ یوانا ڈیمافیلز کے قاتل کو لبنان میں گرفتار کر لیا گیا ہے۔

فلپائنی شہری یوانا ڈیما فیلز کے کویت میں لاپتہ ہونے کے ایک برس بعد پولیس نے اس فلیٹ میں گھس کی تلاشی لی جہاں وہ کام کرتی تھی تو اسے ڈیما فیلز کی لاش فریزر سے ملی۔

فلپائن کی وزارت خارجہ کے مطابق مشتبہ شخص نادر ایصام آصف کو لبنان میں قتل کے شبے میں گرفتار کیا گیاہے۔

ڈیما فیلز کی موت کی خبر کے بعد فلپائن میں غم و غصہ کی لہر دوڑ گئی اور فلپائنی حکومت نے اپنے شہریوں کے کویت سفر کرنے پر پابندی عائد کر دی گئی تھی۔

فلپائن کی حکومت نے ایک ہزار ایسے فلپائنی شہروں کو وطن واپس جانے میں مدد کی تھی جو کویت میں گھریلو ملازم کے طور پر کام کر رہے تھے۔ ایک اندازے کے مطابق فلپائن کے اڑھائی لاکھ باشندے اب بھی کویت میں کام کرتے ہیں۔

نادر ایصام آصف کی گرفتاری کے بعد پولیس کو اس کی بیوی مونا کی تلاش ہے جس کے بارے میں شبہ ہے کہ وہ بھی اس قتل میں شریک تھیں۔

مونا کے بارے میں خیال کیا جاتا ہے کہ وہ اپنے آبائی ملک شام میں روپوش ہیں۔

انٹرپول نے میاں بیوی کی تلاش کے لیے وارنٹ جاری کر رکھے تھے۔

فلپائن کے سیکرٹری خارجہ ایلن پیٹرکیٹانو نے ڈیمافلیز کےمبینہ قاتل کی گرفتاری کا غیر مقدم کیا ہے

کویت میں حکام نے کہا ہے کہ وہ لبنان میں گرفتار ہونے والے شہری کو کویت لا اسے انصاف کے کٹہرے میں لانے کی کوشش کر یں گے۔