وائٹ ہاؤس کے سامنے ایک شخص کی خودکشی

وائٹ ہاؤس

امریکی شہر واشنگٹن میں سیکرٹ سروس کا کہنا ہے کہ ایک شخص نے وائٹ ہاؤس کے سامنے گولی مار کر خودکشی کر لی ہے۔

سیکرٹ سروس کا کہنا ہے کہ یہ شخص پنسلوینیا ایونیو پر واقع وائٹ ہاؤس کے جنگلے کے قریب آیا اور جیب سے پستول نکال کر کئی فائر کیے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ اس واقعے میں کوئی اور زخمی نہیں ہوا۔

اس واقعے کے وقت صدر ڈونلڈ ٹرمپ وائٹ ہاؤس میں موجود نہیں تھے بلکہ وہ فلوریڈا گئے ہوئے ہیں۔

امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ نے عینی شاہدین کے حوالے سے کہا ہے کہ یہ شخص مجمعے میں شامل تھا۔

ٹویٹر پر پوسٹ کی گئی ایک ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ فائرنگ کے بعد بھگدڑ مچ گئی۔

سیکرٹ سروس یا پولیس نے خودکشی کرنے والے شخص کا نام ظاہر نہیں کیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter/@FlorianLuhn/via Reuters
Image caption ٹویٹر پر اپ لوڈ کی گئی ویڈیو میں لوگوں کو بھاگتے دیکھا جا سکتا ہے

واشنگٹن ڈی سی پولیس نے اس سے قبل ٹویٹ کیا تھا کہ جائے وقوعہ پر ’نیچرل ڈیتھ سکواڈ‘ روانہ کر دیا ہے۔

این بی سی نیوز کے وائٹ ہاؤس کے نامہ نگار جیف بینیٹ نے بتایا کہ صحافیوں نے وائٹ ہاؤس کے بریفنگ روم میں پناہ لی۔

صدر ٹرمپ اور خاتون اول فلوریڈا میں ہیں۔ انھوں نے شام کو واپس آنا ہے۔

یاد رہے کہ حالیہ برسوں میں وائٹ ہاؤس کے قریب کئی واقعات ہو چکے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

ایک تازہ ترین واقعہ 23 فروری کو پیش آیا جب ایک 35 سالہ خاتون نے اپنی گاڑی وائٹ ہاؤس کے سکیورٹی بیریئر پر ماری۔ اس خاتون کو حراست میں لے لیا گیا تھا۔

گذشتہ سال مارچ میں ایک شخص وائٹ ہاؤس کا جنگلا عبور کر کے 16 منٹ تک وائٹ ہاوس کے گراؤنڈ میں پھرتا رہا۔

متعلقہ عنوانات