جاپان: باپ نے ’20 سال تک بیٹے کو پنجرے میں قید رکھا‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

جاپان میں پولیس نے ایک 73 سالہ شخص کو اپنے بیٹے کو 20 سال تک لکڑی کے پنجرے میں قید رکھنے کے الزام میں گرفتار کر لیا ہے۔

مقامی میڈیا کے مطابق یوشیٹین یاماساکی نامی اس شخص کا کہنا ہے کہ اس نے اپنے بیٹے کو اس لیے قید میں رکھا کیوں کہ وہ ذہنی مسائل کا شکار تھا اور کبھی کبھی پرتشدد ہو جاتا تھا۔ اب اس کی عمر 42 برس ہو چکی ہے۔

لکڑی کا پنجرہ ایک میٹر اونچا اور تقریباً دو میٹر چوڑا تھا اور اسے یاماساکی نے اپنے گھر کے ساتھ موجود جھوپنڑے میں رکھا ہوا تھا۔

یہ بھی پڑھیے

انڈیا: ’بیٹے نے تین سال تک ماں کی لاش فریزر میں رکھی‘

سوٹ کیس میں اپنا بچہ بھیجنے والا باپ قید سے بچ گیا

شرارتی ویڈیو میں خاوند کو قتل کرنے پر چھ ماہ قید کی سزا

اس شخص کا بیٹا جس کی کمر کم جگہ پر رہنے سے دوہری ہو چکی ہے اب حکام کی تحویل میں ہے۔

مقامی میڈیا کے مطابق اس کی دیکھ بھال اب سماجی بہبود کا ادارہ کر رہا ہے۔

ایک سرکاری اہلکار کو یاماساکی کے گھر کے دورے کے دوران اس پنجرے کے بارے میں معلوم ہوا جس نے حکام کو مطلع کیا کہ ایک بیالس شالہ شخص وہاں قید ہے۔

تفتیش کاروں کا خیال ہے کہ یاماساکی نے اپنے ذہنی مسائل کے شکار بیٹے کو ’پرتشدد‘ ہونے پر 16 سال کی عمر سے ہی قید کر دیا تھا۔

اطلاعات کے مطابق یاماساکی نے خود پر لگے الزامات کو تسلیم کر لیا ہے اور حکام کو بتایا کہ وہ اپنے بیٹے کو روزانہ کھانا دیتا تھا اور ہر دوسرے دن نہلاتا تھا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں