’چرسی چوہے‘ 540 کلو گرام منشیات ہڑپ کر گئے

تصویر کے کاپی رائٹ AFP/GETTY

ارجنٹائین میں پولیس کے آٹھ اہلکاروں کو گمشدہ منشیات کا الزام چوہوں پر عائد کرنے پر برطرف کر دیا گیا ہے۔

تفتیش کاروں نے بیونس آئرس کے شمال مغرب میں واقع پولیس کے ویئر ہاؤس سے 5,460 کلو گرام گمشدہ منشیات دریافت کر لیں۔

شہر کے سابق پولیس کمشنر جاویئر اور دیگر پولیس اہلکاروں نے جج کو بتایا کہ ’چوہوں‘ نے منشیات کھا لیں۔

فورنزک ماہرین کو شک ہے کہ چوہوں نے منشیات کو خوراک کے طور پر دیکھنا ہو گا اور اگر وہ اسے کھا لیتے تو شاید مر جاتے۔

یہ بھی پڑھیں

سات دن میں تین لاکھ سے زیادہ چوہے کیسے مارے؟

’بہار کے سیلاب کی اصل وجہ چوہے ہیں‘

چوہوں نے صدر کو دفتر سے بےدخل کر دیا

'ہزاروں لیٹر شراب چوہوں نے پی لی'

’کسانوں کی موت کو روکو‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

جج ایڈریان گونزیزز کے ایک ترجمان نے کہا ہے کہ بیونس آئرس یونیورسٹی کے ماہرین کے مطابق ’چوہے منشیات کو خوراک کے طور پر کھانے کی غلطی نہیں کرتے اور اگر وہ ایسا کرتے وہ پولیس کے ویئر ہاؤس میں ان کی لاشیں ملتیں۔ ‘

ارجنٹائین پولیس کے آٹھ اہلکار اب چار مئی کو جج کے سامنے گواہی دیں گے۔

عدالت اب اس بات کا فیصلہ کرے گی کہ منشیات کسی ’مصلحت یا غفلت‘ کی وجہ سے چوری ہوئیں۔

خیال رہے کہ بیونس آئرس کے ویئر ہاؤس میں گذشتہ دو سالوں کے دوران 6,000 کلو گرام منشیات سٹور کی گئی تھیں تاہم جاویئر کے جانشین پورٹیرو کو کمشنر کا عہدہ سنبھالنے کے بعد گمشدہ منیشات کے بارے میں معلوم ہوا۔

پورٹیرو نے پولیس فورس کے داخلی امور کے ڈویژن کو خبردار کیا جس نے ویئر ہاؤس کی تلاشی لی اور باقی 5,460 کلو گرام منشیات برآمد کر لیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں