برطانوی عورت سے ایک کیلے کی قیمت 930 پاؤنڈ مانگی گئی

سٹور کا کہنا تھا 'اگرچہ ہمارے کیلے بہت شاندار ہیں، تاہم ہم بھی اس بات سے متفق ہیں کہ وہ اتنے قیمتی نہیں اور واضی طور پر ہمارے سسٹم میں کوئی غلطی ہوئی ہے۔' تصویر کے کاپی رائٹ BOBBIE GORDON
Image caption سٹور کا کہنا تھا: 'اگرچہ ہمارے کیلے بہت شاندار ہیں، تاہم ہم بھی اس بات سے متفق ہیں کہ وہ اتنے قیمتی نہیں اور واضی طور پر ہمارے سسٹم میں کوئی غلطی ہوئی ہے'

برطانوی سپر مارکیٹ ایزڈا کی جانب سے ایک آن لائن آرڈر میں غلطی کی وجہ سے ایک خاتون کو صرف ایک کیلے کے لیے 930 پاؤنڈ چارج کیے گئے۔

یہ رقم پاکستانی روپوں میں ڈیڑھ لاکھ روپے سے زیادہ بنتی ہے۔

برطانوی شہر ناٹنگہم سے تعلق رکھنے والی بابی گورڈن کا کہنا ہے کہ وہ اپنے بل پر یہ دیکھ کر دنگ رہ گئیں کہ ایک کیلے کے لیے 11 پینس کی جگہ 930.11 پاؤنڈ چارج کیے گئے تھے۔

اس کی وجہ سے ان کی کریڈٹ کارڈ کمپنی کے فراڈ ڈپارٹمنٹ نے ادائیگی روک دی اور ان سے فوری رابطہ کیا۔

بابی گورڈن کا کہنا ہے کہ سپر مارکیٹ ایزڈا نے اس ’کمپیوٹر کی غلطی‘ کے لیے معافی مانگی ہے۔

بابی گورڈن کہتی ہیں کہ انھوں نے اپنے سات سالہ بیٹے سے کہا: ’تم پر لازم ہے کہ تم یہ کیلا کھاتے ہوئے بہت زیادہ لطف اندوز ہو۔ اور ہر لقمے کی قدر کرو۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ BOBBIE GORDON
Image caption ایزڈا کے ایک ترجمان نے اس بارے میں معافی مانگی ہے اور کہا کہ ان کی کمپنی سے بل میں غلطی ہوئی

بابی گورڈن کہتی ہیں کہ وہ اور ان کے شوہر بل دیکھ کر حیران رہ گئے مگر انھیں توقع نہیں تھی کہ یہ معاملہ اتنا بڑا ڈراما بن جائے گا۔

’ہم نے سوچا یہ کوئی معمولی سی غلطی ہو گی اور ایسا ہو ہی نہیں سکتا کہ وہ ہمیں اتنا چارج کریں گے۔ مگر پھر ہم سے کریڈٹ کارڈ کمپنی نے رابطہ کیا کہ انھیں فراڈ کا شک تھا اور ایزڈا نے ہمیں چارج کرنے کی کوشش کی تھی!‘

ایزڈا کے ایک ترجمان نے اس حوالے سے معافی مانگی ہے اور کہا کہ ان کی کمپنی سے بل میں غلطی ہوئی۔

ان کا کہنا تھا: ’اگرچہ ہمارے کیلے بہت شاندار ہیں، تاہم ہم بھی اس بات سے متفق ہیں کہ وہ اتنے قیمتی نہیں اور واضح طور پر ہمارے سسٹم میں کوئی غلطی ہوئی ہے۔‘

ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ وہ بابی گورڈن کے مشکور ہیں کہ انھوں نے اس پر توجہ دی اور انھیں اس غلطی سے مطلع کیا تاکہ آئندہ ایسا نہ ہو۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں