میرا مواخذہ ہوا تو مارکیٹ مندی کا شکار ہو جائے گی، سب غریب ہو جائیں گے: ٹرمپ

ٹرمپ

،تصویر کا ذریعہReuters

،تصویر کا کیپشن

صدر ٹرمپ اپنے مواخذے کے معاملے پر کم ہی بات کرتے ہیں

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے مواخذے سے متعلق افواہوں کے بارے میں ردِ عمل دیتے ہوئے تنبیہ کی ہے کہ ایسا کوئی بھی اقدام ملکی معیشت کو نقصان پہنچائے گا۔

فاکس اینڈ فرینڈز کو دیے گئے انٹرویو میں ان کا کہنا تھا ان کا کہنا تھا ’اگر کبھی میرا مواخذہ ہوا تو مارکیٹ مندی کا شکار ہو جائے گی۔‘

انھوں نے یہ بات اپنے سابق وکیل مائیکل کوہن کے اقرارِ جرم کے بعد کہی جس میں انھوں نے 2016 کے انتخابات میں خواتین کو خاموش رکھنے کے لیے رقم دے کر قانون کی خلاف ورزی کی تھی۔

صدر ٹرمپ اپنے مواخذے کے معاملے پر کم ہی بات کرتے ہیں۔

نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ ایسا لگتا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کے مخالفین نومبر کے وسط مدتی انتخابات سے قبل ان کا مواخذہ کرنے کی کوشش کریں گے۔

تاہم صدر ٹرمپ کا کہنا ہے کہ دوںوں خواتین کو رقم کی ادائیگی انتخابی مہم کے قانون کی خلاف ورزیوں میں شامل نہیں ہوتی۔

صدر ٹرمپ کا فاکس اینڈ فرینز کو دیے گئے انٹرویو میں کہنا تھا کہ ’میرے خیال میں سب لوگ غریب ہو جائیں گے۔ ‘

اپنے سر کی طرف اشارے کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا ’اس سوچ کے بغیر آپ دیکھیں گے کہ اعداد کیسے پلٹ کر جاتے ہیں۔‘

،تصویر کا ذریعہGetty Images

،تصویر کا کیپشن

دائیں سے بائیں: پلے بوائے ماڈل کیرن میک ڈوگل، پورن سٹار سٹارمی ڈینیئلز، صدر ٹرمپ، مائیکل کوہن

'خواتین کا منھ بند کرانے کے لیے میں نے رقم دی تھی'

مواد پر جائیں
پوڈکاسٹ
ڈرامہ کوئین

’ڈرامہ کوئین‘ پوڈکاسٹ میں سنیے وہ باتیں جنہیں کسی کے ساتھ بانٹنے نہیں دیا جاتا

قسطیں

مواد پر جائیں

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے سختی سے تردید کی ہے کہ انھوں نے انتخابی مہم کے لیے مختص رقم کو دو خواتین کو جنسی تعلقات کے بارے میں اپنا منھ بند کرنے کے لیے استعمال کیا تھا۔

گذشتہ روز ان کے سابق وکیل مائیکل کوہن نے اقرارِ جرم کیا تھا کہ انھوں نے 2016 کے انتخابات میں خواتین کو خاموش رکھنے کے لیے رقم دے کر قانون کی خلاف ورزی کی تھی۔

ٹی وی چینل فاکس نیوز کو دیے گئے انٹرویو میں صدر ٹرمپ نے کہا کہ یہ رقم خود انھوں نے دی تھی اور یہ مہم کی رقم سے نہیں آئی۔

صدر ٹرمپ کا انٹرویو امریکہ میں جمعرات کو چلے گا، لیکن اس کا مسودہ شائع ہو گیا ہے جس میں وہ کہتے ہیں کہ یہ 'مہم کے قانون کی خلاف ورزی نہیں ہے۔

'یہ رقم میں نے دی تھی۔ میں نے اس کے بارے میں ٹویٹ بھی کیا تھا۔ یہ مہم کے پیسے میں سے نہیں آئی۔' انھوں نے یہ بھی کہا کہ انھیں اس کے بارے میں 'بعد میں' پتہ چلا۔

تاہم ان کے وکیل کوہن نے اس کے برخلاف حلف اٹھا کر کہا ہے کہ صدر نے انھیں یہ رقم ادا کرنے کی ہدایت کی تھی۔

جولائی میں کوہن نے ایک ٹیپ جاری کی تھی جس میں صدر ٹرمپ مبینہ طور پر رقم کی ادائیگی کے بارے میں بات کر رہے ہیں۔

کیا صدر ٹرمپ نے اپنی تردید خود کر دی؟

اپریل میں پورن سٹار سٹارمی ڈینیئلز کے ساتھ جنسی تعلقات کے بارے میں بات کرتے ہوئے صدر ٹرمپ نے کہا تھا کہ انھیں اس رقم کے بارے میں کچھ معلوم نہیں جو ان کے وکیل کوہن نے ڈینیئلز کو دی تھی۔

سٹارمی ڈینیئلز نے کہا ہے کہ ٹرمپ نے ان کے ساتھ 2006 میں ایک ہوٹل کے کمرے میں سیکس کیا تھا۔

،تصویر کا ذریعہEPA

،تصویر کا کیپشن

صدر ٹرمپ اس سے قبل انکار کر چکے ہیں کہ کوہن نے یہ رقم ان کے کہنے پر دی تھی

جب ایک رپورٹر نے اس وقت صدر ٹرمپ سے پوچھا کہ کوہن کے پاس ڈینیئلز کو دینے کے لیے رقم کہاں سے آئی تو انھوں نے کہا تھا 'مجھے نہیں پتہ۔'

اس کے اگلے مہینے ٹرمپ نے کہا کہ کوہن کو 2016 میں ایک لاکھ اورڈھائی لاکھ ڈالر کے درمیان ادائیگی ہوئی تھی۔

غیر قانونی ادائیگی

کسی سیاسی امیدوار کے بارے میں پریشان کن خبریں دبانے کے لیے رقم دینے کو امریکی مالیاتی قانونی کی خلاف ورزی سمجھا جا سکتا ہے۔

خود کوہن تسلیم کرتے ہیں کہ انھوں نے سیاسی مہم سے متعلق مالیاتی قانون توڑا ہے۔

کوہن ایک عشرے تک ٹرمپ کے وکیل رہے ہیں اور انھوں نے تسلیم کیا ہے کہ انھوں نے دو خواتین، سٹارمی ڈینیئلز اور کیرن میک ڈوگل کو ٹرمپ کے ساتھ جنسی تعلقات چھپانے کے لیے رقم دی تھی۔

منگل کو انھوں نے عدالت میں حلف اٹھا کر کہا کہ انھوں نے 'امیدوار' کی ہدایت پر ان خواتین کو رقم دی تھی۔ یہاں امیدوار سے مراد ٹرمپ ہیں۔

کوہن کے وکیل لینی ڈیوس کا کہنا ہے کہ اگر کوہن پر مقدمہ چلایا جا سکتا ہے تو ٹرمپ پر کیوں نہیں؟