مونیکا لیونسکی اسرئیل میں بل کلنٹن کے بارے میں سوال پر انٹرویو چھوڑ کر چلی گئیں

تصویر کے کاپی رائٹ TAL SCHNEIDER/TWITTER
Image caption چینل 2 نیوز کے اینکر لیوی یونت نے جب ان کے افیئر کے بارے میں سوال کیا تو وہ انتہائی خاموشی سے وہاں سے چلی گئیں

مونیکا لیونسکی اسرائیل میں ہونے والا ایک انٹرویو اس وقت چھوڑ کر چلی گئیں جب ان سے بل کلنٹن کے ساتھ ان کے رشتے کے بارے میں سوال کیا گیا۔

ٹوئٹر پر مونیکا لیونسکی نے اس کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ وہ تب انٹرویو چھوڑ کر گئیں جب ان سے ایسے موضوع کے بارے میں پوچھا گیا ’جس پر بات نہیں ہو سکتی‘۔

اسرائیل کے چینل 2 نیوز نے مونیکا لیونسکی کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ وہ ان کے ’حساسات‘ کی قدر کرتے ہیں۔

مونیکا لیونسکی کے بارے میں یہ بھی پڑھیئے

Metoo# مونیکا لیونسکی نے کس تجربے کی بات کی

لیونسکی اور سٹورمی: دو صدور، دو سکینڈل

وائٹ ہاؤس کی سابق انٹرن مونیکا لیونسکی نے بل کلنٹن کے ساتھ تعلقات کو اپنی مرضی کے خلاف بتاتے ہوئے کہا تھا کہ ’صدر نے میرا فائدہ اٹھایا‘۔

مونیکا اور اس وقت کے امریکی صدر بل کلنٹن کے درمیان رشتے کی بات سنہ 1998 میں سامنے آئی تھی جب مونیکا کی عمر 22 سال تھی جبکہ بل کلنٹن ان سے 27 سال بڑے تھے۔

وضح رہے کہ مونیکا لیونسکی یروشلم میں انٹرنیٹ اور سوشل میڈیا کے فوائد اور نقصانات کے موضوع پر بات کر رہی تھیں۔

اسی موقع پر ان سے چینل 2 نیوز کے اینکر لیوی یونت نے جب ان کے افیئر کے بارے میں سوال کیا تو وہ انتہائی خاموشی سے وہاں سے چلی گئیں۔

ٹوئٹر پر انھوں نے اپنے بیان میں کہا: ’یروشلم میں انٹرویو کے بارے میں یہ خیال تھا کہ میری تقریر کے موضوع پر گفتگو ہوگی، نا کہ نیوز انٹرویو۔‘

چینل 2 نیوز کا کہنا ہے کہ وہ مونیکا لیونسکی کی درخواست پوری کرنے کی کوشش کریں گے۔

چینل کا مزید کہنا ہے کہ ’ایسا لگتا ہے کہ سوال جو پوچھا گیا صحیح تھا اور قابل احترام تھا اور کسی بھی طرح سے مونیکا لیونسکی کی درخواست سے آگے نہیں گیا۔‘

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں