امریکہ: ہندوؤں کے لیے’ قابل اعتراض‘ اشتہار پر رپبلکن پارٹی کی معافی

گنیش
Image caption امریکہ میں گدھا ڈیمو کریٹس کا نشان ہے جبکہ ہاتھی رپبلکنز کا

امریکہ کی رپبلکن پارٹی نے ایک اشتہار کی اشاعت پر ہندوؤں سے معاف مانگی ہے جس کا مقصد ان سے محبت کا اظہار کرنا تھا لیکن الٹا اس نے انھیں ناراض کر دیا۔

یہ اشتہار ہندوؤں کے ایک تہوار کے موقع پر شائع کیا گیا جن میں ان کے بھگوان گنیش کی تصویر کے ساتھ ایک سیاسی پیغام بھی درج تھا: ’آپ ایک گدھے کی پوجا کرنا چاہیں گے یا ایک ہاتھی کی؟ انتخاب آپ کا ہے۔‘

امریکہ میں گدھا ڈیمو کریٹس کا نشان ہے جبکہ ہاتھی رپبلکنز کا۔

اسی بارے میں

گوشت کے اشتہار میں گنیش پر انڈیا ناراض

رام کی اہلیہ 'سیتا جی ٹیسٹ ٹیوب بےبی تھیں'

رپبلکن پارٹی نے ٹیکسس میں اخبار میں اشتہار شائع کرنے والی فور بینڈ کاؤنٹی کی شاخ سے اس کی وضاحت کرنے کو کہا ہے۔

ہندوؤں کی تنظیم کے رکن رشی بھوتادا نے ایک بیان میں کہا ’اگرچہ ہم اس بات کی تعریف کرتے کہ پارٹی نے ہندوؤں کے اہم تہوار ہر ان کے قریب آنے کی کوشش کی لیکن ہندو بھگوان گنیش کو اپنے سیاسی نشان کے طور پر استعمال کرنا مشکلات پیدا کرنے والا اور قابل اعتراض تھا۔‘

کئی دوسرے ہندوؤں نے اس اشتہار کی تصویر ٹوئٹر پر شیئر کر کے پارٹی سے اس واپس لینے کو کہا۔

اس ردِ عمل کے جواب میں پارٹی کا کہنا تھا کہ اشتہار کا مقصد ہندو اقدار اور روایات کی ہتک کرنا نہیں تھا۔

فورٹ بینڈ کاؤنٹی رپبلکن پارٹی کے چیئرمین جیسی جیٹن نے صحافیوں کو بتایا ’اگر اس اشتہار سے کسی کو تکلیف پہنچی ہے تو ہم خلوص دل سے ان سے معافی چاہتے ہیں۔ یقیناً ہمارا یہ مقصد نہیں تھا۔‘

اس معافی نامہ کے بعد ہندوؤں کی تنظیم نے بھی اسے قبول کرنے کا بیان جاری کر دیا۔

تاہم رشی بھوتادا کا کہنا تھا ’یہ سوال قائم رہے گا کہ وہ آئندہ ایسی غلطیوں سے کیسے بچیں گے جو نہ صرف ہندوؤں بلکہ دیگر برادریوں کی ناراضی کا سبب ہیں۔‘

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں