یورپی رہنماؤں کی بریگزٹ کے معاہدے کی توثیق

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

یورپی لیڈروں نے برطانیہ کے یورپی یونین سے نکل جانے کے معاہدے کی منظوری دے دی ہے۔

یورپی یونین کے سربراہ ڈونلڈ ٹسک نے اس بات کا اعلان اپنی ایک ٹویٹ کے ذریعے کیا۔

برسلز میں اتوار کو ایک گھنٹے سے بھی کم مدت تک جاری رہنے والی بات چیت کے بعد 27 یورپی رہنماؤں نے اس معاہدے کی منظوری دی۔

سنیچر کو مسٹر ٹسک نے سپین کی جانب سے آخری منٹ میں جبرالٹر کے حوالے سے تحفظات ختم کرنے کے بعد یہ اشارہ دیا تھا کہ ڈیل ہو جائے گی۔

اب اس معاہدے کی برطانوی پارلیمان سے منظوری ضروری ہے جہاں بہت سے اراکین اس کی مخالفت کر رہے ہیں۔

برطانیہ نے سنہ 2016 میں ریفرنڈم کے آرٹیکل 50 کے تحت 18 ماہ تک مذاکرات کیے تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter

برطانیہ کو 29 مارچ 2019 کو طے شدہ تاریخ پر یورپی یونین سے نکلنا ہے۔

برطانوی پارلیمان میں اس معاہدے پر ووٹنگ کی توقع دسمبر کے اوائل میں ہے لیکن ابھی اس کی توثیق کی کوئی گارنٹی نہیں۔ کنزرویٹو، ڈی یو پی، ایس این پی اور لبرل ڈیموکریٹس کی جانب سے اس کے مخالف ووٹ آنے کی توقع ہے۔

ادھر ملک کی وزیراعظم ٹریزامے نے پہلے ہی کہہ دیا ہے کہ یہ بہترین معاہدہ ہے جو بریگزیٹ کے ریفرنڈم کے بعد ہو سکتا تھا۔ انھوں نے عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ اس میں ان کا ساتھ دیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں