اردوغان نے پیاز کو ’دہشت گرد تنظیم‘ قرار دے دیا؟

ترکی میں پیاز کی فصل تصویر کے کاپی رائٹ Fundanur Öztürk
Image caption ترکی میں حکومت کا کہنا ہے کہ ذخیرہ اندوزی کی وجہ سے پیاز کی قیمتوں میں اضافہ ہوا ہے

پاکستان میں سبزیوں خاص کر ٹماٹر کی قیمتوں میں اضافے پر سوشل میڈیا پر طنزیہ مواد شائع کیا جاتا ہے لیکن اس وقت ایسی صورتحال ترکی میں ہے جہاں پیاز کی قیمت میں کئی گنا اضافے پر سوشل میڈیا پر لطیفے شیئر کر رہے ہیں۔

ترکی کو افراط زر اور شرح سود میں اضافہ اور کاروبار میں مندی کے مسئلے کا سامنا تو ہے ہی لیکن اب پیاز کے بحران کی وجہ سے صدر رجب طیب اردوغان نے اس معاملے پر سخت اقدامات کا اعلان کرتے ہوئے ملک میں ذخیرہ کیے گئے پیاز کو تلاش کرنے کا حکم دیا ہے۔

2018 کے اوائل کے مقابلے میں اس وقت پیاز کی قیمت کئی گنا بڑھ چکی ہے اور زرعی ماہرین کے مطابق قیمتوں میں اضافے کی متعدد وجوہات ہیں۔ ماہرین کے مطابق جہاں پیاز ذخیرہ کیا گیا وہ چھاپے مارنا مسئلے کا طویل المدتی حل نہیں ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

دوسری جانب ترکی میں عوام نے سوشل میڈیا پر’ پیاز کے بحران‘ کے حوالے سے طنزیہ پوسٹ کرنا شروع کی ہیں جس میں اب سیاست دان بھی شامل ہو گئے ہیں۔

ترکی میں حزب مخالف جماعت رپبلکن جماعت کے رہنما کمال کلغولو نے مذاق میں کہا ہے کہ’ پیاز کو رونے نہ دیں۔‘

اس بارے میں مزید پڑھیے

غذائیت کا پاور ہاؤس جڑ والی سبزیاں

لہسن، سبزی ہے یا مصالحہ؟

یہ مسئلہ تو حل ہو گیا کہ آج کیا پکے گا

حکومت کا کہنا ہے کہ انسپیکٹرز نے معاملے کی چھان بین شروع کر دی ہے اور انقرہ میں ذخیرہ کیے گئے 50 ہزار ٹن پیاز برآمد ہوئے ہیں۔

ترک صدر رجب طیب اردوغان نے متنبہ کیا ہے کہ’ آلو اور پیاز، سبزیاں اور پھل ذخیرہ کرنے والوں کو اس کی قیمت ادا کرنا پڑے گی۔‘

اس پر گڈ پارٹی کی رہنما مرال آکسنر نے کہا کہ’اردوغان نے پیاز کو دہشت گرد تنظیم قرار دے دیا ہے۔‘

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر سبان دلسز نے کارٹون کے ساتھ ٹویٹ کی۔

’ زبردست ایک پیاز۔۔۔۔ میں قسم سے اس کو کھا رہا ہوں اور بیچ نہیں رہا۔۔۔۔`

کوزے اوندر نے ٹویٹ کی ہے کہ’ میرے پاس پیاز کی ایک بوری ہے اور مجھے ڈر لگ رہا ہے کہ وہ میرے گھر پر چھاپہ مارنے آ رہے ہیں۔‘

ٹویٹر پر لوگوں نے عالمی خبروں کو موضوع بناتے ہوئے ملک میں پیاز کے بحران پر طنزیہ ٹویٹس بھی کی ہیں جس میں @kacsaatoldu1881 نے لکھا’ چند منٹ پہلے ہی خلائی گاڑی ان سائٹ نے چھ ماہ میں 30 کروڑ میل کا سفر کر کے مریخ پر لینڈ کیا ہے لیکن چند گھنٹے پہلے ہی ایک ایک گودام پر چھاپہ مارا گیا ہے جہاں پیاز رکھے گئے تھے۔‘

اسی بارے میں