ماسکو میں امریکی شہری جاسوسی کے الزام میں گرفتار

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

روس کے سکیورٹی کے ادارے ایف ایس بی نے ایک امریکی شہری کو ماسکو میں جاسوسی کے الزامات میں گرفتار کر لیا ہے۔

گرفتار شدہ امریکی شہری کی شناخت پال ویہلن کے نام سے کی گئی ہے اور انھیں دسمبر کی اٹھائیس تاریخ کو جاسوس کے الزام میں حراست میں لیا گیا۔

روس میں ایف ایس بی جو ملک کے خلاف جاسوسی کو روکنے کا مجاز ادارہ ہے اس نے پال ویہلن کے بارے میں کوئی تفصیل جاری نہیں کی۔

یہ بھی پڑھیے

حلب میں ’شامی فوج نے کارروائی معطل کر دی‘

’روس بھی برطانوی سفارت کاروں کو جلد ملک بدر کرے گا‘

روسی خبر رساں ادارے تاس کے مطابق اگر پال ویہلن پر جاسوسی کرنے کے الزامات ثابت ہو گئے تو انھیں دس سے بیس سال تک قید کی سزا سنائی جاسکتی ہے۔

امریکہ کی طرف سے اس کے شہری کی جاسوسی کے الزامات میں ماسکو میں گرفتاری پر اب تک کوئی رد عمل سامنے نہیں آیا۔

روس کے امریکہ اور برطانیہ سے تعلقات خاص طور پر گزشتہ ایک سال سے اس نوعیت کے رہے ہیں جس میں ایک دوسرے پر جاسوسی کرنے کے الزامات کثرت سے لگائے جاتے رہے ہیں۔

اس ماہ کے اوائل میں روس کی 'گن رائٹ' کارکن ماریہ بوتینہ کو امریکہ میں گرفتار کیا گیا تھا اور انھوں نے اپنے آپ پر لگنے والے الزامات کا اعتراف بھی کر لیا تھا۔ امریکہ میں سرکاری وکلا نے انھیں روسی ریاست کا ایجنٹ قرار دیا تھا جو قدامت پسند سیاسی گروپوں میں گھس چکی تھیں۔

اس سال مارچ میں برطانیہ اور اس کے مغربی اتحادی ملکوں نے سو سے زیادہ روسی سفارت کاروں کو سرگئی سرکپال کو زہر دینے کے واقعہ کے بعد واپس روس بھیج دیا تھا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں