'یہ وہ مائیکل جیکسن نہیں جسے میں جانتا تھا'

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption برطانوی نشریاتی ادارے چینل فور اور امریکی چینل ایچ بی او کی اس نئی ڈاکومینٹری میں دو افراد جیمز سیفچک اور ویڈ رابنسن نے مرحوم کنگ آف پاپ پر بچوں کو جنسی طور پر ہراساں کرنے کا الزام عائد کیا ہے

برطانوی اداکار مارک لیسٹر نے معروف پاپ سٹار مائیکل جیکسن کے بارے میں نئی ڈاکومینٹری 'لیوننگ نیور لینڈ' کی ریلیز پر اپنے مرحوم دوست کا دفاع کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس ڈاکومینٹری سے انھیں 'گھن آرہی ہے'۔

برطانوی نشریاتی ادارے چینل فور اور امریکی چینل ایچ بی او کی اس نئی ڈاکومینٹری میں دو افراد جیمز سیفچک اور ویڈ رابنسن نے مرحوم کنگ آف پاپ پر الزام عائد کیا ہے کہ مائیکل جیکسن نے انھیں بچپن میں جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا۔

برطانوی نشریاتی ادارے آئی ٹی وی سے بات کرتے ہوئے مارک لیسٹر نے کہا کہ 'یہ وہ مائیکل جیکسن نہیں جنھیں میں 30 سال سے ذائد عرصے سے جانتا تھا۔ یہ وہ شخص نہیں جسے میرے بچے جانتے تھے۔'

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption مائیکل جیکسن کے خاندان نے ان الزامات کی سختی سے تردید کی ہے اور کہا ہے کہ یہ فلم 'صرف اور صرف مالی مفادات کے لیے' بنائی گئی ہے

لیسٹر نے کہا کہ یہ ڈاکومینٹری 'سنسنی' پھیلانے کے لیے ہے اور تین سے چار ہفتے میں یہ پرانی خبر ہوجائیگی اور لوگ اسے بھول جائیں گے۔

برطانوی اداکار نے مزید کہا کہ انھوں نے کبھی مائیکل جیکسن کو اس طرح کا رویہ یا حرکت کرتے ہوئے نہیں دیکھا۔

'میں اس کے بچوں کا گاڈ فادر تھا اور وہ میرے بچوں کا۔ میں نے یہ ڈاکومینٹری بہت کھلے ذہن کے ساتھ دیکھنے کی کوشش کی۔ اور میرے ذہن میں مائیکل کے بارے میں جو تاثر تھا وہ ہر گز نہیں بدلا'۔

'لیونگ نیورلینڈ' کے ڈائریکٹر ڈین ریڈ نے ان الزامات کی تردید کی ہے کہ ڈاکومینٹری بنانے والوں کا مقصد مالی فائدہ ہے۔

ادھر مائیکل جیکسن کے خاندان نے ان الزامات کی سختی سے تردید کی ہے اور کہا ہے کہ یہ فلم 'صرف اور صرف مالی مفادات کے لیے' بنائی گئی ہے۔

کنگ آف پاپ کی اسٹیٹ نے چینل فور کے شریک پروڈیوسر امریکی چینل ایچ بی او کے خلاف مقدمہ دائر کر رکھا ہے اور کہا ہے کہ ہرجانے کی رقم سو ملین ڈالر سے تجاوز کرے گی۔

الزام لگانے والے افراد رابسن اور جیمز سیف چک نے کہا ہے کہ ان کا مقصد انصاف ہے اور وہ پیسے کے پیچھے نہیں ہیں۔

لیونگ نیور لینڈ کی ریلیز کے بعد متعدد ریڈیو اسٹیشنز نے مائیکل جیکسن کے گانوں کا بائیکاٹ کیا ہے اور سوشل میڈیا پر فینز نے جہاں مائیکل جیکسن کے خلاف رائے دی ہے وہیں ان کے حق میں بھی بہت سے صارفین نے ٹوئیٹس اور انسٹاگرام پوسٹس کی ہیں۔

اسی بارے میں