مصر کا ’ٹیڑھا اہرام‘ سیاحوں کے لیے کھول دیا گیا

A man stands in front of the Bent Pyramid, Egypt. Photo: 13 July 2019 تصویر کے کاپی رائٹ EPA

مصر میں حکام نے ملک میں سیاحت کے وسیع پیمانے پر فروغ کے لیے دارالحکومت قاہرہ کے نزدیک واقع ’ٹیڑھا‘ یا ’بینت اہرام‘ کو سیاحوں کے لیے کھول دیا ہے۔

دہشر میں واقع اس اہرام کو تقریباً 2600 قبل مسیح میں ’سنفرو‘ یا ’سورس‘ نامی فرعون کے لیے تعمیر کیا گیا تھا۔

People walk in front of the Bent Pyramid. Photo: 13 July 2019 تصویر کے کاپی رائٹ EPA

درحقیقت اس اہرام کو 54 ڈگری زاویے کے ساتھ ڈیزائن کیا گیا لیکن یہ ایسی مٹی پر تعمیر کیا گیا تھا جس میں ٹھہراؤ اور استحکام کے مسائل تھے۔

لہٰذا اس کا حل ہرم کے زاویے کو 43 ڈگری پر رکھ کر کیا گیا۔

A man walks next to the Red Pyramid at Dahshur. Photo: 13 July 2019 تصویر کے کاپی رائٹ AFP/Getty Images

اس اہرام کی زاویائی شکل شمال میں واقع سیدھی تکون کی شکل والے سرخ اہرام سے مختلف ہے۔

A man walks out of a passage from inside the Bent Pyramid. Photo: 13 July 2019 تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

سیاح اب شمال کی جانب سے 79 میٹر لمبی تنگ سرنگ کے ذریعے اہرام کے اندر گہرائی میں موجود دو حجروں تک پہنچ سکتے ہیں۔

A man brushes off dust from a sarcophagus, part of a new discovery carried out near the King Amenemhat II's pyramid at Dahshur. Photo: 13 July 2019 تصویر کے کاپی رائٹ AFP/Getty Images

آثار قدیمہ کے ماہرین نے دہسر میں ایک سال تک کی جانی والی کھدائی کے دوران دریافت ہونے والے مجسمے، چہرے پر ڈالے جانے والے نقاب اور آلات کو بھی سیاحوں کے لیے نمائش کا حصہ بنایا ہے۔

A recently discovered sarcophagus at Dahshur. Photo: 13 July 2019 تصویر کے کاپی رائٹ AFP/Getty Images

مصر میں سیاحت ملک کی آمدنی کا ایک اہم ذریعہ ہے.

۔

اسی بارے میں