جرمنی: آخری رسومات کے موقع پر غلطی سے چرس والا کیک پیش کر دیا گیا

شمالی جرمنی میں مقامی پولیس نے کہا ہے کہ ایک شخص کی آخری رسومات کے بعد سوگواران کو غلطی سے چرس والا کیک پیش کر دیا گیا۔

ویتھاگان میں واقع ایک ریستوران میں کیک کھانے کے بعد آخری رسومات میں شرکت کرنے والے 13 افراد نے متلی اور سر چکرانے کی شکایت کی۔

پولیس کی تفتیش سے پتہ چلا کہ ریستوران میں کام کرنے والی ایک عورت کی بیٹی کو کیک بنانے کے لیے کہا گیا تھا۔

یہ بھی پڑھیے

کراچی دنیا بھر میں چرس پینے والوں کا دوسرا بڑا شہر

صفائی کرنے کی سزا ملنے پر مجرم فرار

اکھڑ مزاج بچے کو ڈاکٹر نے بھنگ تجویز کر دی

18 سالہ لڑکی نے چرس والا کیک ایک اور موقع کی مناسبت سے بنایا تھا مگر غلطی سے اس کی والدہ کام پر غلط کیک لے گئیں۔

تدفین کے بعد کافی پینے اور کیک کھانے کے لیے باہر جانا ایک جرمن روایت ہے۔

قریبی شہر روسٹاک کی پولیس کا کہنا ہے کہ ملازمہ کی بیٹی سے تقفیش کی جا رہی ہے۔

خبر رساں ایجنسی اسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق یہ واقعہ اگست کے آخر میں پیش آیا مگر اسے سوگواران کا خیال رکھتے ہوئے منظر عام پر نہیں لایا گیا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں