قزاقستان طیارہ حادثہ: آلماتی سے نور سلطان جانے والی پرواز حادثے کا شکار، 12 افراد ہلاک، 60 زخمی

طیارہ تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

وسطی ایشیا کے ملک قزاقستان میں جمعہ کی صبح ایک مسافر طیارے کو حادثہ پیش آیا ہے جس میں اب تک 12 افراد کی ہلاکت کی تصدیق ہو چکی ہے۔

ایئر پورٹ حکام کے مطابق قزاقستان کی فضائی کمپنی بیک ایئر کا ایک مسافر طیارہ آلماتی کے ہوائے اڈے سے پرواز کرنے کے تھوڑی ہی دیر بعد زمین پر آ گرا۔

طیارے میں 93 مسافر اور عملے کے پانچ اہلکار سوار تھے اور اس کی منزل قزاقستان کا دارالحکومت نور سلطان تھی۔

آٹھ بچوں سمیت کم از کم 60 زخمی افراد کو مقامی ہسپتالوں میں لے جایا گیا۔

قزاقستان کی وزارتِ داخلہ کے مطابق ہلاک ہونے والوں میں چھ بچے بھی شامل ہیں۔ اس سے قبل سرکاری طور پر جاری کی جانے والی فہرست میں 16 افراد کا ذکر کیا گیا لیکن ایک تازہ لسٹ کے مطابق ہلاک ہونے والوں کی تعداد 12 ہے۔

یہ بھی پڑھیے

5 مہینوں میں دوسرا حادثہ، بوئنگ کو سخت سوالات کا سامنا

انڈونیشیا: سرچ آپریشن میں ڈرون اور سونار کا استعمال

کمرشل ایئر لائنز کے لیے محفوظ ترین سال

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

’جہاز میں کوئی چیخ و پکار نہیں ہوئی‘

تینگری نیوز کے مطابق حادثے میں بچ جانے والی مرال عرمان کا کہنا ہے کہ جہاز اڑتے ہی ڈگمگانے لگا۔

وہ کہتی ہیں کہ ’پہلے ایسے محسوس ہوا جیسے جہاز لینڈ کر گیا ہو لیکن دراصل ہم کسی چیز سے ٹکرا گئے۔‘

مرال نے بتایا کہ جہاز کے عملے نے خارجی دروازے کھول دیے تاکہ مسافر جہاز سے باہر نکل سکیں۔ ’جہاز میں زیادہ افراتفری نہیں مچی۔ کوئی چیخ و پکار نہیں ہوئی۔‘

انھوں نے مزید بتایا کہ بعد میں انھوں نے دیکھا تو جہاز کے ’دو ٹکرے‘ ہو چکے تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

حادثہ کب اور کیسے پیش آیا؟

مقامی وقت کے مطابق صبح سات بج کر 22 منٹ پر جہاز کی بلندی میں تیزی سے کمی واقع ہوئی۔ جہاز پہلے ایک پتھر کے بیریئر سے ٹکرایا اور پھر ایک دو منزلہ عمارت میں جا لگا تاہم اس میں آگ نہیں لگی۔

جہازوں کی آمد و رفت پر نظر رکھنے والی ویب سائیٹ فلائیٹ ریڈار24 کا کہنا ہے کہ جہاز نے مقامی وقت کے مطابق سات بج کر 21 منٹ پر اڑان بھری اور جہاز کی طرف سے آخری سگنل بھی اسی منٹ میں موصول ہوا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

فلائیٹ ریڈار24 کے مطابق بیک ایئر فلائیٹ ایک فوکر 100 طیارہ تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter/@H_Aram
Image caption سوشل میڈیا سے لی گئی تصویر

حکومتی ردِعمل

قزاقستان کے صدر قاسم جومارٹ ٹوکائیو نے متاثرین کے اہلِ خانہ کے ساتھ گہرے افسوس کا اظہار کیا ہے۔

حادثے کی تحقیقات کے لیے خاص کمیٹی تشکیل دی جائے گی۔

٭یہ خبر اپ ڈیٹ کی جا رہی ہے٭

اسی بارے میں