#CoronaVirus: ہانگ کانگ میں مسلح ڈاکوؤں نے سینکڑوں ٹوائلٹ رولز چوری کر لیے

رولز تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption مقامی میڈیا رپورٹس کے مطابق پولیس نے دو افراد کو گرفتار کر کے کچھ چوری شدہ رولز برآمد کر لیے ہیں

ہانگ کانگ میں مسلح ڈاکوؤں نے 1000 ہانگ کانگ ڈالرز (130 امریکی ڈالر، 98 پاؤنڈز) مالیت کے سینکڑوں ٹوائلٹ رولز چوری کر لیے ہیں۔

ہانگ کانگ میں اس وقت ٹوائلٹ رولز کی قلت پائی جاتی ہے۔ یہ صورتحال کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے بعد گھبراہٹ میں کی گئی خریداری کے بعد پیدا ہوئی ہے۔

پولیس کے مطابق ڈاکوؤں نے چاقو لہراتے ہوئے منگ کوک ضلع میں ایک سپر مارکیٹ کے باہر ڈلیوری کرنے والے شخص کو لوٹ لیا۔

مقامی میڈیا رپورٹس کے مطابق پولیس نے دو افراد کو گرفتار کر کے کچھ چوری شدہ رولز برآمد کر لیے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

کورونا وائرس سے انڈیا کے گاؤں میں بحران کیوں؟

’دادا کو مرنے سے تین گھنٹے قبل ہسپتال میں بیڈ ملا‘

کورونا وائرس: تیل کی تجارت متاثر، قیمتوں میں کمی

چوری کا یہ واقعہ پیر کو منگ کوک ضلعے میں علی الصبح پیش آیا۔ ہانگ کانگ کا یہ علاقہ جرائم کے گروہوں کے لیے مشہور ہے۔

مقامی اطلاعات کے مطابق ڈاکوؤں نے ڈیلیوری ورکر کو اس وقت دھمکی دی جب وہ ویلکم سپر مارکیٹ کے باہر ٹوائلٹ پیپر کے رولز اتار چکا تھا۔

ایپل ڈیلی کی ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ 600 ٹوائلٹ پیپر رولز جن کی قیمت 1695 ہانگ کانگ ڈالرز ہے، چوری ہو گئے ہیں۔

شہر بھر کے سٹورز میں نیا سامان آنے پر لمبی قطاریں اور سامان فوراً ختم ہوتے دیکھا گیا ہے۔

حکومتی یقین دہانیوں کے باوجود کہ کورونا وائرس پھیلنے سے سپلائی متاثر نہیں ہو رہی، ہانگ کانگ کے رہائشی ٹوائلٹ پیپر ذخیرہ کر رہے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption حکام خوف و ہراس میں کی جانے والی خریداری کا الزام آن لائن پھیلنے والی افواہوں پر عائد کرتے ہیں

پریشانی کا شکار لوگ چاول، پاستا اور صفائی ستھرائی کا سامان بھی خریدتے دیکھے گئے ہیں۔

کورونا وائرس سے ہونے والی ہلاکتوں کی تعداد 1700 سے بڑھ گئی ہے۔ ہانگ کانگ کے باشندے خود کو کورونا وائرس سے بچانے کی کوششوں میں لگے ہیں اسی لیے چہرے کے ماسک اور ہینڈ سینیٹائزر حاصل کرنا تقریباً ناممکن ہے۔

پولیس ترجمان کا کہنا تھا کہ ’تین افراد نے چاقو لہراتے ہوئے ایک ڈلیوری کرنے والے شخص کو دھمکی دی اور 1000 ہانگ کانگ ڈالز (130 امریکی ڈالر، 98 پاؤنڈ) مالیت کے سینکڑوں ٹوائلٹ رولز چوری کر لیے۔‘

حکام خوف و ہراس میں کی جانے والی خریداری کا الزام آن لائن پھیلنے والی افواہوں پر عائد کرتے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ کھانے پینے اور گھریلو سامان کی فراہمی مستحکم ہے۔

سنگاپور میں بھی خریدار ٹوائلٹ رولز، ہینڈ سینیائٹرز اور چہرے کے ماسک خریدتے پائے گئے۔ سنگاپور میں اب تک 75 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہو چکی ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں