آذربائیجان، آرمینیا تنازع: ناگورنو قرہباخ میں صورتحال کیا ہے؟

A view shows the aftermath of recent shelling during the ongoing fighting between Armenia and Azerbaijan over the breakaway Nagorno-Karabakh region, in the disputed region's main city of Stepanakert

،تصویر کا ذریعہGetty Images

حالیہ دنوں میں آذربائیجان اور آرمینیا کے مابین جاری جنگ میں کشیدگی مزید بڑھ گئی ہے۔ ان دونوں ملکوں کے مابین تنازع ناگورنو قرہباخ کے متنازع خطے پر ہو رہا ہے جو کہ سرکاری طور پر آذربائیجان کا حصہ ہے لیکن اس کے انتظامی أمور آرمینین نسل کے افراد کے پاس ہے۔

موجود لڑائی دہائیوں میں ہونے والی سب سے بڑی لڑائی ہے اور دونوں فریقین نے ایک دوسرے کو مورد الزام ٹھیرایا ہے۔

آذربائیجان اور آرمینیا نے 1988 سے لے کر 1994 تک اس خطے پر جنگ کی تھی اور بالآخر جنگ بندی کا اعلان کیا تھا تاہم اس پر باضابطہ کوئی معاہدہ نہیں ہوا۔

،تصویر کا ذریعہEPA

،تصویر کا کیپشن

یہ تصویر آرمینیا کی وزارت دفاع کی جانب سے جاری کی گئی جس میں ملک کا ایک توپ چلاتے نظر آ رہا ہے

دونوں فریقین نے بھاری گولہ باری کی ہے جس کے نتیجے میں شہروں علاقوں میں مکانات اور دیگر عمارتوں کو نقصان پہنچا ہے۔

اس تصویر میں ناگورنو قرہباخ کے رہائشی نظر آ رہے ہیں جنھوں نے اپنا علاقہ چھوڑ کر آرمینیا کے ایک سرحدی حصے میں پناہ حاصل کی اور وہاں انھیں کھانا فراہم کیا جا رہا ہے۔.

،تصویر کا ذریعہGetty Images

آذربائیجان کے فوجی ناگورنو قرہباخ کے دارالحکومت سٹیپناکرٹ پر گولہ باری کر رہے ہ

شہر سے بڑے پیمانے پر جانی نقصان کی اطلاعات ہیں اور آرمین پریس کے خبر رساں ادارے کے مطابق شہر میں بجلی نہیں ہے۔

،تصویر کا ذریعہGetty Images

،تصویر کا کیپشن

ایک معمر بندوق بردار خاتون اپنے گھر کے باہر بیٹھی ہوئی ہیں

ناگورنو قرہباخ میں حکام کا کہنا ہے کہ انھوں نے آذربائیجان کے دوسرے سب سے بڑے شہر گانجا میں فوجی ائیرپورٹ پر گولی باری کی

،تصویر کا ذریعہGetty Images

،تصویر کا کیپشن

آذربائیجان میں گانجا کے شہر اور دیگر قریبی قصبوں اور گاؤں میں آگ بجھانے والے عملے کو بھیج دیا گیا ہے

خدشہ ہے کہ دونوں فریقین کے فوجیوں اور شہریوں کی بڑی تعداد کی ہلاکتیں ہوئی ہیں لیکن سرکاری طور پر دیے گئے اعداد و شمار کی آزادانہ تصدیق ممکن نہیں ہوئی ہے۔

،تصویر کا ذریعہGetty Images

،تصویر کا کیپشن

یہ خاتون گانجا کے ہسپتال میں لائی گئیں

آذربائیجان کی فوج کا کہنا ہے کہ انھوں نے خطے کے کئی گاؤوں پر قابو پا لیا ہے جبکہ ناگورنو قرہباخ کے حکام نے کہا ہے کہ انھوں نے اگلے مورچوں پر اپنی پوزیشن مضبوط کر لی ہے۔

،تصویر کا ذریعہGetty Images

،تصویر کا کیپشن

بھاری اسلحے کے استعمال کی وجہ سے شہر کی سڑکوں کو بھاری نقصان پہنچا ہے

آذربائیجان کی حکومت نے کہا ہے کہ رہائشی عمارتیں اور تاریخی مقامات کو اس لڑائی میں نقصان پہنچا ہے۔

،تصویر کا ذریعہGetty Images

،تصویر کا کیپشن

گانجا کی یہ عمارت بھی شیلنگ کا نشانہ بنی

دونوں فریقین کی جنگ سے ان کے شہریوں کو بھاری نقصان کا سامنا کرنا پڑا۔

،تصویر کا ذریعہGetty Images

،تصویر کا کیپشن

اکثر لوگوں کے ذاتی استعمال کی اشیا تباہ ہو گئی ہیں۔ یہ ناگورنو قرہباخ میں ایک اپارٹمنٹ کی پہلی منزل کا منظر ہے

تمام تصاویر کے جملہ حقوق محفوظ ہیں۔