آؤڈی چین میں مقامی کمپنی کے ساتھ مل کر الیکٹرک گاڑیاں تیار کرے گی

Audi car at auto show in Beijing

،تصویر کا ذریعہGetty Images

جرمن کار کمپنی آؤڈی چین میں گاڑیاں بنانے والی سب سے پرانی کمپنی فا کے ساتھ مل کر لگژری الیکٹرک گاڑیاں تیار کرے گی۔

فا چین کی تیسری بڑی گاڑیاں بنانے والی کمپنی ہے اور اس کی بنائی گئی کاروں میں مشہور ریڈ فلیج بھی شامل ہیں، یعنی چین کی کمیونسٹ پارٹی کے رہنماؤں کے زیر استعمال مخصوص لیموزین کاریں۔

چین دنیا کی سب سے بڑی الیکٹرک کار ماکیٹ بھی ہے اور یہاں فا کا مقابلہ مقامی کمپنیوں گیلی اور سائک سے ہے۔

فا اور آؤڈی کی شراکت میں ایک نئی فیکٹری بنائی جائے گی جس میں مکمل طور پر الیکٹرک گاڑیاں بنائی جائیں گی۔

یہ بھی پڑھیے

4.6 ارب ڈالر کی لاگت سے تعمیر ہونے یہ نئی فیکٹری چین کے شمال مشرقی شہر چنگچن شہر میں سنہ 2024 تک تعمیر ہو گی۔

’آؤڈی چائنا‘ کے صدر ورنر ایشہورن نے کہا ہے کہ ‘آؤڈی اور فا کے درمیان یہ نئی گہری دوستی آؤڈی کی چینی مارکیٹ میں ایک گولڈن دہائی کا عندیہ ہے۔‘

چین دنیا میں آؤڈی کے لیے سب سے بڑی مارکیٹ ہے جہاں کمپنی نے سنہ 2020 میں سات لاکھ سے زیادہ گاڑیاں فروخت کیں۔

آؤڈی کی کوشش ہے کہ سنہ 2025 تک چین میں اس کی سیلز کا ایک تہائی الیکٹرک کاریں ہوں۔

اعلان کردہ نئی فیکٹری میں آؤڈی (اور اس کی مالک کمپنی ووکس ویگن) کا حصہ ساٹھ فیصد ہو گا جبکہ فا کا حصہ چالیس فیصد ہو گا۔

،تصویر کا ذریعہGetty Images

فا پہلے ہی آؤڈی کے روایتی کاریں مقامی طور پر تیار کرتا ہے اور اس کے آؤڈی اور ووکس ویگن کے ساتھ پرانے روابط ہیں۔

فا کمپنی 1950 کی دہائی میں چین کی کمیونسٹ پارٹی کے چیئرمین ماؤ ژیدونگ کی جانب سے صنعت کاری پر دی جانے والی توجہ کے نتیجے میں بنی تھی۔

اس کی مقبول ترین کار ہونگقی ہے جو کہ سفارتکاروں اور کمیونسٹ پارٹی کے اہلکاروں کے لیے بنائی جاتی تھی۔ تاہم 1980 کی دہائی میں اس کار کی مقبولیت گھٹ گئی اور بعد میں چینی برانڈز کو ترجیح دینے کے تناظر میں مقبولیت دوبارہ بڑھنے لگی۔

چینی صدر سنہ 2015 میں دوسری جنگِ عظیم کے اختتیام کی 70ویں برسی کے موقع پر ملٹری پریڈ میں ہونگقی لیموزین میں ہی سوار نظر آئے تھے۔

فا نے سنہ 2020 میں 30 لاکھ گاڑیاں فروخت کی ہیں جن میں سے دو لاکھ اس کی ہونگقی برانڈ کی کاریں تھیں۔

کمپنی کے منصوبے کے مطابق سنہ 2025 تک بیشتر ہوگقی ماڈل الیکٹرک ہو جائیں گے۔

الیکٹرک کار مارکیٹ

،تصویر کا ذریعہGetty Images

آؤڈی کی جانب سے یہ تازہ ترین اقدام ایک ایسے وقت پر کیا گیا ہے جب چین کی الیکٹرک کار مارکیٹ میں سخت مقابلہ جاری ہے۔

انٹرنیشل انرجی ایجنسی کے مطابق سنہ 2019 میں دنیا میں 72 لاکھ الیکٹرک کاریں تھیں اور ان میں سے 47 فیصد چین میں تھیں۔

چینی مارکیٹ میں دیگر اہم کمپنیوں میں ٹیسلا اور بی ایم ڈبلیو شامل ہیں۔ اس کے علاوہ مقامی کمپنیوں میں نیو، ای ویز، ایکس پنگ، لی آٹو اور ڈبلیو ایم شامل ہیں۔