700 سے زیادہ طالبات کے ساتھ جنسی زیادتی پر امریکی یونیورسٹی 85.2 کروڑ ڈالر ادا کرنے پر راضی

یونیورسٹی

،تصویر کا ذریعہAFP

،تصویر کا کیپشن

ماہر امراض نسواں ڈاکٹر ٹنڈال 30 برس تک یونیورسٹی میں تعینات رہے

امریکہ کی سدرن کیلیفورنیا یونیورسٹی اپنی 700 سے زائد طالبات کے ساتھ جنسی زیادتی روکنے میں ناکامی پر 85.2 کروڑ ڈالر تاوان کی ادائیگی کرنے پر رضا مند ہو گئی ہے۔

یہ کسی بھی یونیورسٹی یا کالج میں جنسی زیادتیوں کے واقعات میں ازالے کے طور پر ادا کی جانے والی سب سے بڑی رقم ہے۔

ان خواتین نے یونیورسٹی کی انتظامیہ کے خلاف مقدمہ کیا تھا کہ اس کے ایک ڈاکٹر نے سنہ 1990 سے لے کر سنہ 2016 تک مختلف اوقات میں انھیں جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا تھا۔

کیلیفورنیا کی سٹیٹ کورٹ میں دائر کیے گئے مقدمے کی وجہ 710 سابقہ طالبات کے وہ الزامات تھے جو انھوں نے یونیورسٹی کے اُس زمانے کے ماہرِ امراضِ نسواں ڈاکٹر جارج ٹِنڈال پر عائد کیے تھے۔ ڈاکٹر ٹنڈال نے ان الزامات کی تردید کی تھی تاہم اُنھیں اس وقت ان الزامات کا ایک اور عدالت میں سامنا ہے۔

مزید پڑھیے

مقدمہ کیا تھا؟

ڈاکٹر جارج ٹنڈال پر کئی خواتین نے الزام لگایا تھا کہ وہ ان کے طبی معائنے کے دوران ان کے ساتھ زیادتیاں کرتے رہے تھے۔ ان خواتین نے عدالت میں مقدمہ دائر کیا تھا کہ ان زیادتیوں کے واقعات کے بارے میں یونیورسٹی کی انتظامیہ کو بتایا گیا تھا لیکن انھوں نے اس ڈاکٹر کو برطرف نہیں کیا۔

لاس اینجلس میں قائم اس یونیورسٹی نے اس ڈاکٹر کو 2017 میں معطل کر دیا تھا۔ اس کے بعد اس معاملے کو سرکاری میڈیکل بورڈ میں بھیج دیا گیا۔

زیادتیوں کے خلاف مظاہرے

اس معاملے پر بے توجہی کی وجہ سے یونیورسٹی میں وسیع پیمانے پر فیکلٹی اور طلباء کے غم و غصے اور مظاہروں کے بعد سنہ 2018 میں ڈاکٹر ٹنڈال کے خلاف الزامات میڈیا میں شائع ہوئے تھے۔ اِن خبروں کے شائع ہو نے کے بعد یو ایس سی کے اس وقت کے صدر بورڈ کی سربراہی سے مستعفی ہو گئے تھے۔

یہاں تک کہ ذرائع ابلاغ کے مطابق اس سکینڈل نے چینی حکومت کو میڈیا میں شائع ہونے والی ان خبروں کی وجہ سے ’گہری تشویش‘ کے اظہار پر مجبور کیا تھا۔ واضح رہے کہ مبینہ طور پر متاثر ہونے والی طالبات میں کئی چین سے تعلق رکھتی ہیں۔

،تصویر کا ذریعہGetty Images

مواد پر جائیں
پوڈکاسٹ
ڈرامہ کوئین

’ڈرامہ کوئین‘ پوڈکاسٹ میں سنیے وہ باتیں جنہیں کسی کے ساتھ بانٹنے نہیں دیا جاتا

قسطیں

مواد پر جائیں

بہت ضروری معاملات

یونیورسٹی آف ساؤتھ کیلیفورنیا (ایس سی) کے بورڈ آف ٹرسٹیز نے جمعرات کو طے پانے والے تصفیے کی توثیق کر دی ہے، جس نے یونیورسٹی کو بتایا کہ نجی طور پر اس تصفیے کی ثالثی کرنے والے اور لاس اینجلس کاؤنٹی کے اعلیٰ عدالت کے جج کے تعاون سے یہ معاہدہ طے پایا ہے۔

یو ایس سی کے موجودہ صدر، کیرول فالٹ نے ایک بیان میں کہا کہ ’میں یو ایس سی برادری کے ان قابل قدر ممبروں کو ہونے والی اس تکلیف پر شدید افسوس کا اظہار کرتا ہوں۔ ہم جرات کرنے والی تمام خواتین کی ہمت کی تعریف کرتے ہیں اور امید کرتے ہیں کہ جارج ٹنڈال کے ہاتھوں زیادتی کا شکار ہونے والی خواتین کو کچھ سکون ضرور ملے گا۔'

وکلا کے خیال میں یہ اس نوعیت کے مقدمے کی ریکارڈ رقم ہے۔ جب آپ اس تصفیے کی رقم کو علیحدہ کلاس ایکشن سوٹ کے ایک سابقہ تصفیہ کے ساتھ ملا کر دیکھیں تو یو ایس سی نے ڈاکٹر جارج ٹنڈل کے خلاف دعووں کے لیے ایک ارب ڈالر کی ادائیگی کرنے پر اتفاق کیا ہے۔

ٹنڈل کے وکیل لیونارڈ لیون نے کہا کہ ’ڈاکٹر ٹنڈال نے اس سے انکار کیا ہے کہ وہ کسی بھی طرح کی بدکاری میں ملوث رہے ہیں۔ انھوں نے مجرمانہ الزامات کے لیے اپنے آپ کو قصور وار نہیں مانا ہے اور انھیں یقین ہے کہ جب بھی عدالت میں یہ الزامات جانچے جائیں گے تو انھیں سراسر بری کردیا جائے گا۔‘

جرم ثابت ہونے پر جارج ٹنڈال کو 64 سال قید کی سزا کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔