دیوارِ برلن کے گرنے کی سالگرہ

دنیا کے کئی ملکوں کے راہنما دیوارِ برلن کے گرائے جانے کے بیس سال پورے ہونے پر منعقد ہونے والی تقریبات میں شرکت کے لیے جرمنی کے شہر بریڈنبرگ جمع ہو رہے ہیں۔

ان تقریبات کے دوران بڑے بڑے ڈومینو گرائےجائیں گے جن سے یہ ظاہر کیا جائے گا کہ مشرقی یورپ میں دیوارِ برلن گرنے کے بعد کیمونسٹ حکومتیں ایک کے بعد ایک کر کے ختم ہو گئیں۔

کمیونسٹ مشرقی جرمنی نے انیس سو اکسٹھ میں مغربی جرمنی کے گرد ایک سو پچپن کلو میٹر لمبی دیوار بنائی تھی۔

یہ دیوار کیمونسٹ مشرقی جرمنی سے فرار ہو کر سرمایہ دار مغربی جرمنی جانے والے لوگوں کو روکنے کے لیے بنائی گئی تھی۔

مشرقی جرمنی سے مغربی جرمنی فرار ہونے کی کوشش میں سو سے زیادہ افراد اس دیوار کو پھلانگتے ہوئے ہلاک ہو گئے تھے۔

یہ دیوار نو نومبر انیس سو نواسی میں کئی ہفتوں تک جاری رہنے والے مظاہروں کے بعد گرا دی گئی تھی۔

جرمنی کی چانسلر اینجلا مرکل جن کا بچپن مشرقی جرمنی میں گزرا تھا ان تقریبات کی صدارت کریں گی۔

گزشتہ ہفتے انھوں نے کہا تھا کہ دیوار برلن کا گرنا جرمنی کی تاریخ کا اہم واقع ہے۔

ان تقریبات میں برطانوی وزیر اعظم گارڈن براؤن ، فرانس کے صدر نکولس سرکوزی اور امریکہ کی وزیر خارجہ ہیلری کلنٹن شرکت کریں گی۔