یوگنڈا: تاریخی ورثہ تباہ، ہنگامے شروع

کمپالا میں مظاہرے شروع یوگنڈا میں مشہور سیاحتی مقام میں آگ لگنے سے انیسویں صدی کا تاریخی مقام راکھ کا ڈھیر بن گیا ہے۔ اس واقعے کے بعد ہنگامے شروع ہو گئے ہیں۔

یوگنڈا کے شہر بگنڈا میں انیسویں صدی کے چار بادشاہوں کے مقبرے ہیں جو قصوبی مقبرے کے نام سے مشہور ہیں۔

دارالحکومت کمپالا سے کچھ فاصلے پر واقع قصوبی مقبرے آگ لگنے کے باعث مکمل طور پر تباہ ہو گئے ہیں۔

قصوبی مقبرے ایک مشہور سیاحتی مقام ہے اور اس کو عالمی ورثے کی حثیت حاصل ہے۔

بگنڈا کے رہائشی ان مقبروں کا بڑا احترام کرتے ہیں۔ اور اس واقعے کے بعد یوگنڈا کے دارالحکومت کمپالا میں لوگوں کی بڑی تعداد جمع ہوگئی۔ عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ مظاہرین پر سکیورٹی فورسز کی جانب سے فائرنگ میں ایک شخص ہلاک ہوا ہے۔

یوگنڈا کے صدر نے قصوبی مقبرے پر جانے کی کوشش کی تو مظاہرین نے ان کا راستہ روکا

بگنڈا کے وزیرِ اطلاعات چارلس پیٹر کا کہنا ہے کہ آگ کی وجہ معلوم نہیں ہے اور بگنڈا کے رہائشیوں کے لیے یہ ایک افسوسناک واقعہ ہے۔

عینی شاہدین کا کہنا تھا کہ آگ مقامی وقت کے مطابق شام ساڑھے آٹھ بجے لگی۔ ایک عورت نے بتایا ہے کہ انہوں نے آگ لگنے سے چند لمحے قبل مقبروں کے پیچھے ایک زوردار دھماکہ سنا تھا۔

ایک اور عینی شاہد اینڈریو کا کہنا تھا کہ آگ لگنے کے کچھ دیر بعد ایک بغیر نمبر پلیٹ کی سفید گاڑی اس مقام سے باہر نکلی تھی۔