اسرائیل کے وزیراعظم کو امن کی امید

بنیامن نیتن یاہو
Image caption بنیامن نیتن یاہو نے بدھ کو صدر باراک اوباما سے ملاقات کی تھی

اسرائیل کے وزیر اعظم بنیامن نیتن یاہو نے کہا ہے کہ امریکہ کے ساتھ واشنگٹن میں بات چیت کےبعد انہیں امید ہے کہ یورشلم میں یہودی بستیوں کے تنازعے پر امریکہ اور اسرائیل کے درمیان جلد سمجھوتا ہوگا۔

واشنگٹن سے واپس اسرائیل جانے سے پہلے مسٹر نیتن یاہو نے کہا ہے کہ مشرقی وسطی میں امن مذاکرات کے لیے ایک 'سنہیرا راستہ' مل گیا ہے۔ حالانکہ وائٹ ہاؤس کی جانب سے سرکاری طور پر اس طرح کا کوئی بیان نہیں آیا ہے۔

گزشتہ روز اسرائیل کے وزیراعظم نے امریکی صدر باراک اوباما سے ملاقات کی تھی اور جاتے جاتے مشرقی وسطی کے لیے ایلچی جارج مشیل سے بھی بات کی تھی۔ لیکن بات چیت کی تفصیلات کسی نے بھی واضح نہیں کی ہیں۔

خیال رہے کہ امریکہ میں اسرائیل کے سفیر نے حال میں متنبہ کیا تھا کہ امریکہ کے نائب صدر جو بائڈین کے اسرائیل کے دورے کے دوران یہودی بستیوں کی تعمیر میں توسیع کے اعلان سے دونوں ملکوں کے تعلقات شدید بحران کا شکار ہو گئے ہیں۔

اسرائیل کے مشرقی یروشلم میں سولہ سو نئے گھر تعمیر کرنے کے منصوبے کے اعلان سے امریکہ اور اسرائیل کے درمیان کشیدگی کی فضا پیدا ہوئی تھی جس کے بعد اقوام ِمتحدہ کے سیکرٹری جنرل بان کی مون نے کہا ہے کہ اسرائیل کی جانب سے یہودی بستیوں کی تعمیر غیر قانونی ہے اور یہ تعمیرات روک دی جائیں۔

امریکی وزیر خارجہ ہلیری کلنٹن نے ایک خطاب میں اسرائیل سے کہا ہے کہ اگر اسرائیل مشرق وسطی میں امن چاہتا ہے تو اسے ایک’مشکل مگر ضروری چناؤ‘ کرنا ہوگا۔

نیتن یاہو پہلے ہی کہہ چکے ہیں کہ فسلطین کی جانب سے یہودی بستیوں کی تعمیرات کو روکنے کے مطالبے کے سبب مشرق وسطیٰ ميں امن مذاکرات کوششیں متاثر ہو سکتی ہیں۔

فلسطینی انتظامیہ نے اسرائیل کے مقبوضہ زمین پر یہودی بستیاں تعمیر کرنے کے اصرار پر غم و غصے کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ یہ ایک سال سے زائد عرصے سے تعطل کا شکار رہنے والے امن مذاکرات کی بحالی کی راہ میں ایک بڑی رکاوٹ ہے۔

اسرائیل کے روزنامہ اخبار ہاریتز میں نیتن یاہو کے حوالے سے ایک بیان شائع کیا جس میں کہا گیا ہے کہ مشرقی وسطی میں امن کے قیام کے لیے وہ سنہیرا راستہ تلاش کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔

ایک امریکی اہلکار نے اپنا نام نہ بتانے کی شرط پر خبررساں ایجنسی اسوسی ایٹیڈ پریس کو بتایا ہے کہ صدر باراک اوباما اور نیتن یاہو کے درمیان بات چیت کے بعد یورشلم میں یہودی بستیوں کی تعمیر پردونوں ملکوں کے درمیان تنازعہ ختم نہیں ہوا ہے۔

وائٹ ہاؤس کے ترجمان مسٹر گبس نے بدھ کو کہا تھا کہ اسرائیل اور امریکہ کے درمیان بعض مسائل پر نا اتفاقی اور اتفاق ہے لیکن اس کے باوجود امریکہ اور اسرائیل کے عوام کے درمیان ایک اٹوٹ رشتہ ہے۔

حالانکہ بی بی سی کے نامہ نگار کم گھٹاس کا کہناا ہے کہ اس بار امریکہ کے دورے کے دوران مسٹر نیتن یاہو کا امریکہ کی جانب سے ایسا استقبال نہیں ہوا جیسا امریکہ کی اتحادیوں کا کیا جاتا ہے۔

ہماری نامہ نگار کا یہ بھی کہنا ہے کہ یوروشلم میں یہودی بستیوں کے معاملے پر امریکہ نے سخت رخ اختیار کررکھا ہے۔

اسی بارے میں