اسامہ کی امریکہ کو تنبیہ

القاعدہ کے رہنما اسامہ بن لادن نے ایک پیغام میں امریکہ کو متنبہ کیا ہے کہ اگر ستمبر گیارہ کے حملوں کے مبینہ ماسٹر مائنڈ خالد شیخ محمد اور ان کے چار ساتھیوں کو سزائے موت دی تو وہ بدلے میں امریکی ہلاک کریں گے۔

عربی ٹی وی چینل الجزیرہ نے یہ مبینہ طور پر اسامہ بن لادن کا آڈیو پیغام نشر کیا ہے۔

اس سال جنوری میں الجزیرہ ہی نے اسامہ کا ایک پیغام نشر کیا تھا جس میں القاعدہ کے سربراہ نے عالمی حدت کا ذمہ وار امریکہ کو ٹھرایا تھا۔ اس پیغام سے ایک روز قبل اسامہ نے ایک اور پیغام میں پچیس دسمبر کو امریکی جہاز تباہ کرنے کی کوشش کو سراہا تھا۔

خالد شیخ محمد اور چار دیگر افراد پر ستمبر گیارہ کے حملوں کا مقدمہ نیو یارک میں شروع ہونے والا ہے۔

اسامہ بن لادن نے اپنے پیغام میں کہا ہے کہ وہائٹ ہاؤس نےاپنا ارداہ صاف ظاہر کردیا ہے کہ وہ خالد شیخ محمد اور دیگر چار ملزمان کو سزائے موت دینے کے حق میں ہے۔ ’لیکن جس دن امریکہ نے یہ فیصلہ کیا اس دن وہ یہ بھا جان لیں کہ ہمارے ہاتھ جو بھی امریکی آئے گا اس کو ہلاک کردیا جائے گا۔‘

امریکی وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ خالد شیخ محمد نے ستمبر دو ہزار ایک میں نیو یارک اور واشنگٹن میں حملوں میں ملوث ہونے کا اعتراف کیا ہے۔

یہ آڈیو پیغام ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب امریکہ میں پاکستان اور امریکے کے درمیان سٹریٹیجیک ڈائیلاگ جاری ہے۔

امریکی اور پاکستانی حکام بارہا کہہ چکے ہیں کہ القاعدہ منتشر ہو گئی ہے۔ امریکی وزارت خزانہ یہ بھی کہہ چکی ہے کہ القاعدہ کو مالی مشکلات کا سامنا ہے۔

اسی بارے میں