ایران پر دباؤ ڈالیں: امریکہ کی اپیل

فائل فوٹو

وائٹ ہاؤس نے ایک بیان میں کہا ہے کہ صدر براک اوباما نے چین کے صدر ہوجن تاؤ نے کے ساتھ ایران کے نیوکلیئر پروگرام پر ایک گھنٹہ تبادلہ خیال کیا ہے۔

بیان کے مطابق صدر اوباما نے ایران کے مسئلے پر بین الاقوامی برادری کی جانب سے مل کر کام کرنے کی ضرورت پر زور دیا ہے تاکہ ایران دنیا کے ساتھ کیے گئے وعدوں پر عملدرآمد کرسکے۔

دونوں رہنماؤں نے تائیوان کے علاوہ معشیت کی بہتری کے لیے جی ٹوئنٹی کی سفارشات پر عملدرآمد کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

یاد رہے کہ ایران کے نیو کلیئر پروگرام پر مذاکرات کی دعوت اُس وقت سامنے آئی ہے جب اُس کے نیوکلیئر پروگرام کے اہم عہدے دار سعید جلیلی مذاکرات کے لیے چین پہنچے ہیں۔

ان مذاکرات کے بعد چین کے وزیرِ خارجہ کا کہنا ہے کہ انہیں امید ہے کہ یہ مسئلہ مذاکرات کے ذریعے حل کیا جا سکتا ہے۔

بیجنگ کا کہنا ہے کہ ایران کے مسئلے کو پر امن طور پر حل کیا جائے۔

واضح رہے کہ چین نے اقوامِ متحدہ کی سلامتی کونسل میں ویٹو پاور رکھنے کے باوجود ماضی میں بھی ایران کے خلاف نئی پابندیاں عائد کرنے پر ہچکچاہٹ کا اظہار کیا ہے۔

اسی بارے میں