زابل: خود کش حملہ، چار ہلاک

افغانستان میں حکام کے مطابق زابل صوبے میں ایک خود کش حملے میں کم سے کم چار لوگ ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے ہیں۔

افغانستان کا نقشہ

صوبائی حکومت کے ترجمان کے مطابق حملہ آور بظاہر پیدل ملک کے جنوبی صوبے میں ایک بازار میں پہنچا اور سکیورٹی گارڈوں کے قریب جا کر حملہ کر دیا۔

زابل میں حالیہ مہینوں میں مزاحمت میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ دریں اثناء افغانستان کے صوبے لوگر میں سینکڑوں لوگوں نے ’نیٹو کی کارروائیوں میں شہریوں کی ہلاکت کے خلاف مظاہرہ کیا ہے۔‘

افغانستان کے جنوب میں ملک کی سکیورٹی فورسز غیر ملکی فوجیوں کے ساتھ مل کر طالبان کے خلاف لڑائی کر رہی ہیں۔

نیٹو نے اشارہ دیا ہے کہ وہ طالبان مخالف لڑائی کو ہلمند سے صوبے قندھار لے کر جانا چاہتے ہیں جس کی سرحد زابل سے ملتی ہے۔

اتوار کو لوگر میں بڑی تعداد میں لوگوں نے گزشتہ رات ہونے والی ہلاکتوں پر امریکہ مخالف مظاہرے میں شرکت کی اور ٹرکوں کو نذر آتش کر دیا۔

نیٹو کا کہنا ہے گزشتہ رات کی کارروائی میں ایک طالبان کمانڈر سمیت متعدد مزاحمت کار ہلاک ہوئے تھے۔ شہریوں کی ہلاکتوں کے خلاف ملک بھر میں شدید غصہ پایا جاتا ہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ برس افغانستان میں نیٹو اور امریکی فوج کے کمانڈر جنرل سٹینلے مککرسٹل نے اپنی کارروائیوں میں شہریوں کی ہلاکتوں کو کم سے کم کرنے کے لیے نئے ضوابط وضح کیے تھے۔

اسی بارے میں